سٹین لیس سٹیل انڈسٹری کو درپیش مسائل کو فوری حل کیا جائے، ایف پی سی سی آئی

سٹین لیس سٹیل انڈسٹری کو درپیش مسائل کو فوری حل کیا جائے، ایف پی سی سی آئی

لاہور(کامرس رپورٹر) ایز آف ڈوئنگ بزنس کی درجہ بندی کو بہتر کیا جائے،سٹین لیس سٹیل انڈسٹری کو درپیش مسائل کو فوری طور پر حل کیا جائے۔انڈسٹری کو در پیش مسائل کے حل کے لئے ایف پی سی سی آئی اپنا کردار ادا کرئے گئی۔ موجودہ بجٹ کے حوالے سے ایف پی سی سی آئی حکومت کے ساتھ ہر سیکٹر سے متعلقہ مسائل کے حل کے لئے مختلف اجلاس کرر ہی ہے اور سٹیل سیکٹر پر موجود ڈیوٹی سے متعلقہ مسائل کو ان تجاویز کا حصہ بنایا جائے گا۔بینک ٹرانزیکشن پر ود ہولڈنگ ٹیکس کو ختم کیا جائے۔ٹیکس اصلاحات کی اشد ضرورت ہے،جو لوگ ٹیکس ادا کر رہے ہیں ،ان کیلئے مشکلات ہیں،اس کے تدارک کیلئے اقدامات کئے جانے چاہیں۔ان خیالات کا اظہار فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری (ایف پی سی سی آئی )کے ریجنل چےئرمین چوہدری عرفان یوسف نے ایف پی سی سی آئی ریجنل آفس میں آل پاکستان سٹین لیس سٹیل امپورٹراینڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشن کے مسائل کے حل کیلئے منعقدہ خصوصی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔سیالکوٹ سے کاروباری برادری کے لیڈر ریاض الدین شیخ نے کہا کہ حکومت کے اچھے کاموں کی تعریف کرنی چاہیے،کاروباری برادری کو اعتماد میں لیے بغیر صنعت و تجارت کی پالیسی کامیاب نہیں ہو سکتی۔حکومت کو بجٹ سمیت تمام معاملات میں کاروباری برادری کو اعتماد میں لینا چاہیے۔ آل پاکستان سٹین لیس سٹیل امپورٹراینڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشن کے چےئرمین غلام حسین نے سٹیل سیکٹر کی پروڈکٹس پر مختلف ڈیوٹیز کے مسائل کے حوالے سے فیڈریشن چیمبر کو اعلیٰ سطح پر گورنمنٹ کے عہدہداروں سے میٹنگ کی درخواست کرتے ہوئے کہاکہ ایک ہی انڈسٹری کی دوپراڈکٹ پر جو کہ صرف امپورٹ کی جا سکتی ہیں پر مختلف ڈیوٹی نے کاروبارکرنا نا ممکن کر دیا ہے۔

انہوں نے مزید کہاکہ کسٹم ڈیپارٹمنٹ خام مال پر کوالٹی کنٹرول سرٹیفیکیٹ کی مد میں 20سے 25ہزار فی ٹرک چارج کرتا ہے جو کہ بہت بڑی نا انصافی ہے اور اسے امپورٹ پالیسی کا حصہ بنا لیا گیا ہے۔

مزید : کامرس