حکومت کمرشل امپورٹرز کی مشکلات میں اضافہ نہ کرے ، نسیم چاولہ ،انجم نثار

حکومت کمرشل امپورٹرز کی مشکلات میں اضافہ نہ کرے ، نسیم چاولہ ،انجم نثار

لاہور (کامرس رپورٹر) پاکستان ایف ایم سی جی امپورٹرز ایسوسی ایشن نے حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ کمرشل امپورٹرز کیلئے بجٹ 2018-19 میں ریلیف دینے کی بجائے مشکلات میں اضافہ نہ کیا جائے ۔پاکستان ایف ایم سی جی امپورٹرز ایسوسی ایشن کے پیٹرن انچیف نسیم احمد چاولہ ، چیئرمین انجم نثار اور سینئر نائب صدر نفیس الرحمن باری نے گزشتہ روز اپنے ایک مشترکہ بیان میں حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ کمرشل امپورٹرز واحد لوگ ہیں جو درآمد کے موقع پر ہی تمام ڈیوٹی اینڈ ٹیکسز ادا کرتے ہیں ، جو پاکستانی معیشت میں ایک اہم کردار ادا کرتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ حکومت نے بجٹ سے قبل کمرشل امپورٹرز کو فائنل ٹیکس رجیم میں رکھا گیا تھا جس کو آنے والے بجٹ میں کم از کم ٹیکس رجیم میں تبدیل کر دیا گیا۔انہوں نے کہا کہ کمرشل امپورٹرز خام مال بھی درآمد کرتے ہیں جس سے مقامی صنعتیں چلتی ہیں کمرشل امپورٹرز پر ٹیکس بڑھانے سے خام مال کی قیمت میں بھی اضافہ ہو جائیگا۔پاکستان ایف ایم سی جی امپورٹرز کے عہدیداروں نے وزیر اعظم پاکستان اور وزیر خزانہ نے مطالبہ کیا ہے کہ کمرشل امپورٹرز کیلئے ودہولڈنگ ٹیکس کو 6 فیصد سے کم کر کے 4 فیصد پر لایا جائے اور کمرشل امپورٹرز کیلئے درآمدی ڈیوٹی اینڈ ٹیکسز کو بھی کم کیا جائے ۔

مزید : کامرس