سرکاری یونیورسٹیاں فنڈز ملنے کے باوجود ریسرچ پر جیکٹس مکمل کرنے میں ناکام

سرکاری یونیورسٹیاں فنڈز ملنے کے باوجود ریسرچ پر جیکٹس مکمل کرنے میں ناکام

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)سرکاری یونیورسٹیاں فنڈز ملنے کے باوجود اپنے ریسرچ پراجیکٹس مکمل کرنے میں ناکام ہوگئیں۔اربوں روپے گرانٹس ملنے کے باوجود ایچ ای سی کے 2573 پراجیکٹس میں سے صرف 610 پراجیکٹس ہی مکمل ہو سکے۔تفصیلات کے مطابق ہائر ایجوکیشن کمیشن (ایچ ای سی) نے سرکاری اور پرائیویٹ یونیورسٹیوں کو ریسرچ پراجیکٹس کے لیے 6 ارب 77 کروڑ روپے جاری کیے۔ہائر ایجوکیشن کمیشن کی دستاویزات کے مطابق یونیورسٹی آف مینجمنٹ اینڈ ٹیکنالوجی لاہور کو ایچ ای سی کی جانب سے 54 پروگرامز کیلئے 21 کروڑ جاری ہوئے لیکن 6 پراجیکٹس مکمل ہوئے۔ لاہور کالج فارویمن یونیورسٹی کو 19 پراجیکٹس کیلئے 5 کروڑ ملے لیکن صرف 6 منصوبے مکمل ہوئے۔ پنجاب یونیورسٹی کو 118 پروگرامز کیلئے 32 کروڑ ملے لیکن صرف 30 منصوبے مکمل ہوئے۔ یونیورسٹی آف ویٹرنری اینڈ اینیمل سائنسزکو پروگرامز کیلئے 4 کروڑ روپے ملے لیکن صرف 4 ہی پروگرام مکمل ہوئے۔ یونیورسٹی آف ایجوکیشن کو 6 منصوبوں کیلئے ایک کروڑ ملے لیکن ایک پروگرام مکمل ہوا۔ کنیئرڈ کالج کو 2 منصوبوں کیلئے ایک کروڑ ملے لیکن ایک بھی منصوبہ مکمل نہ ہوا۔ کنگ ایڈورڈ میڈیکل کالج یونیورسٹی کو 7 منصوبوں کیلئے 90 لاکھ ملے صرف ایک پراجیکٹ مکمل ہوا۔اسی طرح انفارمیشن ٹیکنالوجی یونیورسٹی کو 3 منصوبوں کیلئے 70 لاکھ ملے تاہم ایک بھی منصوبہ مکمل نہ ہوا۔ گورنمنٹ کالج یونیورسٹی کو 31 منصوبوں کیلئے 7 کروڑ ملے لیکن صرف 9 منصوبے مکمل ہوئے۔ کامسٹیس انسٹیٹیوٹ کو 230 پراجیکٹس کیلئے 59 کروڑ ملے تاہم صرف 36 پروگرام ہی مکمل ہوئے۔ یونیورسٹیز انتظامیہ کی اس نا اہلی پر ہائرایجوکیشن کمیشن نے ریسرچ پراجیکٹس ادھورے رہ جانے پرتشویش کا اظہار کیا ہے اور یونیورسٹیوں سے ریسرچ پراجیکٹس مکمل نہ پر وضاحت طلب کر لی ہے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1