افغانستان ، سڑک کنارے بم نصب کرتے پھٹ گیا ، 11طالبان ہلاک ، متعدد زخمی

افغانستان ، سڑک کنارے بم نصب کرتے پھٹ گیا ، 11طالبان ہلاک ، متعدد زخمی

کابل، نیویارک (مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں)افغانستانکے صوبہ غزنی میں دھماکہ خیز مواد پھٹنے کے نتیجے میں گیارہ طالبان ہلاک ہوگئے جبکہ اقوام محدہ نے دو اپریل کو افغان فورسز کی قندوز کے مضافات میں ایک مذہبی تقریب پر کی جانیوالی بمباری میں 107 بچوں کے جاں بحق ہونے کی بھی تصدیق کر دی۔ تفصیلات کے مطابق صوبہ غزنی حکومت کے ترجمان ہارلیف نوری نے بتایا کہ گزشتہ روز ضلع آندرہ میں دھماکہ خیز مواد چانک پھٹنے کے نتیجے میں بم ساز ماہرین سمیت گیارہ طالبان ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ،ترجمان نے بتایاطالبان یہ دھماکہ خیز مواد سڑک کنارے نصب کرنے کی تیاری کررہے تھے۔

ادھر اقوام متحدہ کی طرف سے دو اپریل کو افغان فورسز کی جانب سے قندوز کے مضافات میں منعقدہ ایک مذہبی تقریب کو زمینی اور فضائی نشانہ بنانے کی کارروائی سے متعلق جاری ہونیوالی تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق اس بمباری میں 107 بچے اور71 زخمی ہوئے تھے۔ اقوام متحدہ کی تحقیقاتی رپورٹ تیار کرنیوالے اہلکاروں کے مطابق وہ 107 متا ثر ین کی تصدیق کر سکے ہیں جبکہ انہیں مختلف ذرائع سے مختلف فہرستیں حاصل ہوئی ہیں، جن کے مطابق ہلاک ہونیوالوں کی تعداد 200 سے زائد بنتی ہے۔ رپورٹ میں افغان سکیورٹی فورسز کی اس نئی اسٹریٹجی پر بھی تشویش کا اظہار کیا گیا ہے، جو امریکی مشیران کیساتھ مل کر بنائی گئی ہے۔ اسی حکمت عملی کے تحت طالبان کیخلاف فضائی حملوں میں اضافہ کیا گیا ہے۔افغانستان میں اقوام متحدہ کے امدادی مشن کی جاری کردہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کابل حکومت نے راکٹوں اور بھاری مشین گنوں کا استعمال کیا۔اقوام متحدہ نے رپورٹ مرتب کرنے کیلئے لغمانی گاؤں کے نوے سے زائد عینی شاہدین کے انٹرویوز کیے، اس گاؤں میں ان بچوں کی دستار بندی کی تقریب جاری تھی، جو قرآن حفظ کر چکے تھے۔

افغانستان

مزید : علاقائی