رمضان المبارک میں کسی ٹی وی چینل پر سرکس اور نیلا م گھر نہیں ہو گا : جسٹس شوکت عزیز صدیقی

رمضان المبارک میں کسی ٹی وی چینل پر سرکس اور نیلا م گھر نہیں ہو گا : جسٹس شوکت ...

اسلام آباد( آن لائن )اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے کہا ہے کہ رمضان المبارک میں کسی چینل پر کوئی نیلام گھر اور سرکس نہیں ہو گا، اسلام کا تمسخر اڑانے کی اجازت کسی کو نہیں ہو گی،ہر چینل پر پانچ وقت اذان نشر کرنا لازم ہو گا۔رمضان ٹرانسمیشن اور مارننگ شوز کے حوالے سے ضابطہ اخلاق پر عمل درآمد کیس کی سماعت گزشتہ روز اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس شوکت عزیز صدیقی پر مشتمل سنگل رکنی بینچ نے کی۔ سماعت شروع ہوئی تو فاضل جج نے ریمارکس دیئے کہ اسلامی تشخص اور عقائد کا تحفظ ریاست کی ذمہ داری ہے۔ پی ٹی وی نے بھی اذان نشر کرنا بند کر دی ہے ایسے ہی چلتا رہا تو پھرپاکستان کے نام سے اسلامی جمہوریہ ہٹا دیں ۔دوران سماعت فاضل جج نے استفسار کیا پاکستان براڈ کاسٹر ایسوسی ایشن کے وکیل کہاں ہے جس پر معاون وکیل نے بتایا کہ وہ چھٹی پر ہے۔ فاضل جج نے ریمارکس دیتے ہوئے وکیل کو بتائیں اس رمضان میں کوئی داؤ نہیں چلے گا۔ بعد ازاں ڈی جی پیمرا نے عدالت کو بتایا پیمرا کی جانب سے تمام چینلز کو گائیڈ لائن جاری کی جا رہی ہے۔ ڈی جی پیمرا کی جانب سے تمام چینلز کو گائیڈ لائن بھی عدالت میں پیش کی گئی ۔ عدالت نے117میں سے کتنے چینل اذان نشر کرتے ہیں کی رپورٹ جمع کروانے کا حکم دیتے ہوئے سماعت 9مئی تک کیلئے ملتوی کر دی۔

جسٹس شوکت عزیز صدیقی

مزید : صفحہ اول