عمران خان نے مریم نواز کو مات دیدی مگر کس میدان میں ؟ جان کر آپ بھی حیران رہ جائیں گے

عمران خان نے مریم نواز کو مات دیدی مگر کس میدان میں ؟ جان کر آپ بھی حیران رہ ...
عمران خان نے مریم نواز کو مات دیدی مگر کس میدان میں ؟ جان کر آپ بھی حیران رہ جائیں گے

  

کراچی(ویب ڈیسک)سوشل میڈیا ویب سائٹ ٹوئٹرسیاسی دائرہ اثر بڑھانے کے لیے دنیا بھر کے سیاستدانوں کا پسندیدہ ترین ہتھیار بن گیا۔پاکستان میں نوجوانوں کی آبادی میں روز افزوں اضافے کے پیش نظر پاکستان کے سیاستدانوں نے زیادہ سے زیادہ نوجوانوں کی توجہ حاصل کرنے کے لیے سوشل میڈیا کا رخ کر لیا ہے۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

انٹرنیٹ اور سوشل میڈیا کے استعمال کے حوالے سے پاکستان تحریک انصاف اپنی سیاسی حریف جماعتوں سے ہمیشہ ایک قدم آگے رہی ہے۔ اس جماعت کا یہ بھی دعویٰ ہے کہ وہ پاکستان میں اپنا ویب پورٹل بنانے والی پہلی سیاسی جماعت ہے۔ پاکستان مسلم لیگ (ن) اس میدان میں کہیں پیچھے ہے۔ پارٹی رہنماﺅ کا کہنا ہے کہ ماسوائے چند ایک نوارد رہنماﺅں کے پارٹی رہنماﺅں کی اکثریت سوشل میڈیا کے حوالے سے روایتی قسم کے خیالات رکھتی ہے۔

ایکسپریس ٹریبیون کے مطابق پی ٹی آئی کے قائد عمران خان کے ٹوئٹر فالوورز میں سب سے زیادہ اضافہ دیکھنے میں آیا۔ 34دنوں میں ان کے فالوورز میں ایک لاکھ تہتر ہزار نوسو کا اضافہ ہوا جن میں نوے ہزار ایسے ہیں جنہوں نے پہلی بار ٹوئٹر اکاﺅنٹ بنایا۔ پنجاب کے وزیر اعلی اور مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف نے اس مقابلے میں دوسری پوزیشن حاصل کی ہے۔ وہ اس عرصے کے دوران ایک لاکھ پانچ ہزار ایک سو تہتر فالوورز بنانے میں کامیاب ہوئے ہیں جن میں سے اکسٹھ ہزار نے نئے اکاﺅنٹس بنائے ہیں۔ مریم نواز اس دوڑ میں تیسرے نمبر پر رہیں جن کے فالوورز میں پچانوے ہزار تین سو چون کا اضافہ ہوا جن میں سے انسٹھ ہزار آٹھ سو نے نئے اکاﺅنٹس بنائے۔

پی ٹی آئی کے جہانگیر ترین چوتھے نمبر پر رہے جن کے فالوورز میں بیاسی ہزار سات سو گیارہ کا اضافہ ہوا۔ پی ٹی آئی، مسلم لیگ ن اور کچھ دیگر جماعتون کے قائدین کے فالوورز کی تعداد میں بھی نمایاں اضافہ دیکھنے میں آیا جن میں فواد چودھری، خواجہ آصف، خواجہ سعد رفیق اور متعدد معروف شخصیات شامل ہیں تاہم دلچسپ بات یہ ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین آصف زرداری اور ان کی بہن بختاور کے فالوورز میں اضافے کی شرح بہت کم رہی۔ دونوں کو پچاس ہزار سے کم نئے فالوورز ملے۔ ان کے علاوہ ایم کیو ایم اور پی اے ٹی کے رہنماﺅں کے فالوورز بھی اس عرصے کے دوران بڑھے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /علاقائی /سندھ /کراچی