یہ پولیس والا اس فقیر کیساتھ یہاں کیا کر رہا ہے؟ تفصیلات سامنے آئیں تو ہر پاکستانی کی آنکھیں نم ہو گئیں، جان کر آپ بے اختیار داد دینے پر مجبور ہو جائیں گے

یہ پولیس والا اس فقیر کیساتھ یہاں کیا کر رہا ہے؟ تفصیلات سامنے آئیں تو ہر ...
یہ پولیس والا اس فقیر کیساتھ یہاں کیا کر رہا ہے؟ تفصیلات سامنے آئیں تو ہر پاکستانی کی آنکھیں نم ہو گئیں، جان کر آپ بے اختیار داد دینے پر مجبور ہو جائیں گے

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پنجاب پولیس کی شہرت کچھ زیادہ اچھی نہیں ہے اور ہر کوئی یہی کہتا ہے کہ پولیس اہلکار بہت سخت ہوتے ہیں اور عوام کیساتھ بھی اچھے طریقے سے پیش نہیں آتے مگر سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی اس پولیس اہلکار کی تصاویر نے پاکستانیوں کو اپنی سوچ بدلنے پر مجبور کر دیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔”استغفراللہ!!! اللہ ہی بچائے ایسے لباس سے جو۔۔۔“ صباءقمر نے اپنی ایسی تصاویر ”ہاٹ“ کہہ کر شیئر کر دیں کہ پاکستانی ان کا لباس دیکھ کر ہی غصے سے آگ بگولہ ہو گئے، دیکھ کر آپ کو بھی یقین نہیں آئے گا کہ یہ صباءقمر ہے 

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی تصاویر میں ایک پولیس اہلکار کو فقیر کیساتھ کھڑے دیکھا جا سکتا ہے۔ ایک تصویر میں پولیس اہلکار فقیر کے جوتے ٹھیک کر رہا ہے تو ایک میں فقیر کو پولیس اہلکار کے گلے لگتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے لیکن یہ دونوں ایسا کیوں کر رہے ہیں؟ حقیقت سامنے آئی تو ہر کسی کی آنکھیں نم ہو گئیں اور ہر کوئی بے اختیار پولیس اہلکار کی تعریف کرنے پر مجبور ہو گیا۔

سوشل میڈیا پر سامنے آنے والی تفصیلات کے مطابق اس پولیس اہلکار اور فقیر کا کوئی تعلق نہیں لیکن جب پولیس اہلکار نے فقیر کو تپتی دھوپ میں سڑک پر ننگے پاﺅں چلتا دیکھا تو اسے اپنے ساتھ لیا اور جوتوں والی دکان پر لے گیا جہاں سے اسے نئے جوتے دلوائے تاکہ وہ شدید گرمی میں تپتی سڑک پر ننگے پاﺅں چلنے سے بچ سکے۔ 

کیا واقعی ایسا ہوا یا نہیں؟ مصدقہ ذرائع سے اس کی تصدیق تو نہیں ہو سکی لیکن تصاویر کچھ ایسی کہانی ہی بیان کر رہی ہیں اور جو سننے والوں کی آنکھیں نم ہو جاتی ہیں اور بے اختیار پولیس اہلکار کیلئے دل سے دعا نکلتی ہے۔سوشل میڈیا صارفین نے پولیس والے کے اس اقدام کو خوب سراہا اور دل کھول کر تعریف کی۔

میاں زبیر مبارک نے لکھا ”شکر ہے اللہ کا انسانیت اب بھی زندہ ہے۔ ورنہ پولیس کو دیکھ کر تو اچھا خاصا بندا بھی جوتے اتار کر بھاگتا ہے“

عاشق حسین نے لکھا ”چلو مل کر ہم بھی اپنے حصے کا دیا جلائیں اس پولیس والے کا ایڈریس، فون نمبر اور جوتے کا نمبر لکھیں۔ ہم سبھی دنیا سے مہنگے مہنگے جوتے اسے تحفے کے طور پر بھیجیں گے تاکہ یہ پولیس والا اس دنیا میں نیکی کا بدلہ پائے اور باقیوں کو رغبت ملے“

ذکاوت علی نے لکھا ”اللہ کا پسندیدہ ترین شخص وہ ہے جس کے وجود سے اللہ کے مخلوق کو آرام اور راحت ہو جو مظلوم کا مددگار ہو اور ظالم سے بیزار ہو“

ایاز خان نے لکھا ”ایسے پولیس والے کو سیلوٹ کرتا ہوں جو ملک و قوم کی خدمت کرتے ہیں“

مبشر اعجاز نے لکھا ”اس پولیس والے نے تو دل جیت لئے ہیں۔ کوئی اس کا نام پتہ اگر جانتا ہے تو بتا دے“

ہارون قریشی نے لکھا ”اچھے لوگ بھی پولیس میں ہیں جن کی حوصلہ افزائی کرنی چاہئے کیونکہ اچھائی کی حوصلہ افزائی سے ہی برائی ختم ہو سکتی ہے نہ کہ طعن و تنقید سے“

عزیز نے لکھا ”اللہ جزاءدے، معاشرے کو ایسے ہی لوگوں کی ضرورت ہے، زندہ باد“

سدرہ رحمان نے لکھا ”اللہ تعالیٰ اس کی زندگی میں آسانیاں پیدا کرے۔۔۔ آمین“

زبیر نذیر گوندل نے لکھا ”اللہ تعالیٰ اس پولیس والے کو ہزاروں خوشیاں عطاءفرمائے، دنیا میں اچھے لوگ موجود ہیں“

مزید : ڈیلی بائیٹس /علاقائی /پنجاب /لاہور