سیرت حضرت موسیٰ علیہ السلام اور دیائے نیل کا دو حصوں میں تقسیم ہونا ،سائئنس اس عظیم معجزے کے بارے میں کیا کہتی ہے ؟

سیرت حضرت موسیٰ علیہ السلام اور دیائے نیل کا دو حصوں میں تقسیم ہونا ،سائئنس ...
سیرت حضرت موسیٰ علیہ السلام اور دیائے نیل کا دو حصوں میں تقسیم ہونا ،سائئنس اس عظیم معجزے کے بارے میں کیا کہتی ہے ؟

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)حضرت عیسیٰ علیہ السلام کی آمد سے تقریباً 15 سو سال قبل بنی اسرائیل کی رہنمائی کے لیے آنے والے حضرت موسیٰ علیہ السلام کو اللہ تعالی نے کئی معجزوں سے نوازا تھا۔

ان کا ایک معجزہ دریائے نیل کا 2 حصوں میں منقسم ہوجانا بھی تھا،جدید سائنس نے بھی اس معجزے کی تصدیق کرتے ہوئے اسے خالصتاً فطری عمل قرار دیا ہے۔

حال ہی میں ہونے والی تحقیق کے مطابق بحری سائنس کے ماہرین اس بات کی توثیق کرتے ہیں کہ انتہائی تیز رفتار ہوائیں اتنی طاقت رکھتی ہیں کہ دریا یا سمندر کے کسی مخصوص حصے سے پانی کو اڑا کر اس جگہ کو بالکل خشک بناسکتی ہیں اور یہ جگہ دریا کے کسی بھی حصے میں ہوسکتی ہے۔

۔۔۔۔ویڈیو دیکھیں ۔۔۔۔

مزید : ویڈیو گیلری