ٹرمپ کی ایرانی نیوکلیئر ڈیل ختم کرنے کے بعد ایرانی صدر نے بھی بہت بڑا اعلان کردیا، اپنے سائنسدانوں کو اہم حکم جاری کردیا، ایسا کیا بولا ہے؟ ایٹمی جنگ کا خطرہ بڑھ گیا

ٹرمپ کی ایرانی نیوکلیئر ڈیل ختم کرنے کے بعد ایرانی صدر نے بھی بہت بڑا اعلان ...
ٹرمپ کی ایرانی نیوکلیئر ڈیل ختم کرنے کے بعد ایرانی صدر نے بھی بہت بڑا اعلان کردیا، اپنے سائنسدانوں کو اہم حکم جاری کردیا، ایسا کیا بولا ہے؟ ایٹمی جنگ کا خطرہ بڑھ گیا

  

تہران(مانیٹرنگ ڈیسک)سابق امریکی صدر باراک اوباما کے دور میں عالمی طاقتوں نے برسوں کے مذاکرات کے بعد ایران کے ساتھ ایٹمی معاہدہ کیا تھا، جسے صدر ٹرمپ نے ردی کی ٹوکری میں پھینکنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ ان کے اس اقدام پر اب ایرانی صدر کی طرف سے ایسا جوابی اقدام اٹھا لیا گیا ہے کہ دنیا ایٹمی جنگ کے خطرے سے دوچار ہو گئی ہے۔ دی انڈیپنڈنٹ کی رپورٹ کے مطابق ٹرمپ کی طرف سے ایٹمی معاہدہ ختم کرنے کے فیصلے کے بعد ایرانی صدر حسن روحانی نے اپنے ایٹمی سائنسدانوں کوصنعتی پیمانے پر یورینیم افزودہ کرنے کا حکم دے دیا ہے۔

صدر حسن روحانی نے ایران کے ریاستی ٹی وی سٹیشن سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ”امریکی صدر ٹرمپ ایران کے ساتھ نفسیاتی جنگ کبھی نہیں جیت سکیں گے، ہم انہیں اپنے اعصاب سے کھیلنے کی کبھی اجازت نہیں دیں گے۔ میں نے وزیرخارجہ کو عالمی طاقتوں کے ساتھ مذاکرات کا حکم دے دیا ہے تاکہ ہم امریکہ کو ملوث کیے بغیر اس ایٹمی معاہدے کو بچا سکیں، تاہم اس کے لیے ہمارے پاس بہت کم وقت باقی ہے۔ اگر یہ وقت بھی گزر گیا تو امریکہ یاد رکھے کہ ایران کے پاس اعلیٰ معیار کی افزودہ یورینیم موجود ہو گی جس سے ہم ایٹمی ہتھیار بنائیں گے۔“

واضح رہے کہ صدر ٹرمپ کے ایران کے ساتھ ایٹمی معاہدہ ختم کرنے کے حکم پر فرانسیسی صدر ایمانوئیل میکرون، برطانوی وزیراعظم تھریسامے اور جرمن چانسلر کی طرف سے مشترکہ بیان جاری کیا گیا ہے جس میں ان کا کہنا تھا کہ ”ہمیں صدر ٹرمپ کے اس فیصلے پر بہت پچھتاوا ہے۔ اس سے دنیا کو ایٹمی ہتھیاروں سے پاک کرنے کی تمام کوششوں پر پانی پھر جائے گا۔“اس ایٹمی معاہدے کے دیگر دو فریق چین اور روس تاحال اس معاملے پر خاموش ہیں۔

مزید : بین الاقوامی