داتا دربار حملہ فرقہ ورانہ دہشتگردی کی بد ترین سازش ہے،مفتی ظفر

داتا دربار حملہ فرقہ ورانہ دہشتگردی کی بد ترین سازش ہے،مفتی ظفر

لاہور(پ ر)متحدہ علما و مشائخ کونسل پاکستان کے مرکزی چیئرمین مفتی ظفر جبار چشتی نے داتا دربار پر ہونے والے دہشت گردی پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا ہے کہ داتا دربار حملہ فرقہ ورانہ دہشتگردی کی بد ترین سازش ہے بلکہ افواج پاکستان کے دہشتگردوں کو دیئے جانے والے چیلنج کا جواب ہے کہ انہیں پیار محبت سے سمجھائیں جانے والی کوئی بھی چیز سمجھ نہیں آتی اب فوج کو بھی بلاتفریق نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد کرتے ہوئے ان انتہا پسندوں اور دہشت گردوں کو نشان عبرت بنانا چاہئے جو نہ صرف مزارات کے دشمن ہیں بلکہ وہ پاکستان کی سالمیت سے کھلواڑ کررہے ہیں داتا حضور کا مزار نہ صرف روحانی سکون اور عظیم خانقاہ ہے بلکہ یہاں پر آنے والے لاکھوں زائرین کو بروقت فیوض اور برکات کے علاوہ 24 گھنٹے لنگر بھی مہیا ہوتا۔

اور یہ مرکز پورے پاکستان کا سب سے بڑا روحانی مرکز اور سخاوت کی بہترین مثال ہے۔

حکومتی ادارے اگر پہلے سے یہاں پر دھماکہ کرنے والے دہشت گردوں کو کیفر کردار تک پہنچاتے تو آج دوبارہ کسی شخص کو ہمت نہ ہوگئی کہ وہ داتا حضور کے مزار کو دوبارہ نشانہ بناتا ان خیالات کا اظہار انہوں نے لاہور کے مختلف ہسپتالوں میں زخمیوں کی عیادت کرتے ہوئے کہا انہوں نے کہا کہ متحدہ علماء مشائخ کونسل کے پلیٹ فارم سے عنقریب آل پارٹیز کانفرنس بلا کر پاکستان کے دشمنوں کو واضع پیغام دیں گے کہ داتا کے ماننے والے پاکستان بنانے والے پر دہشت گردی اور جارحیت کا بھرپور جواب دیں گے۔ کیونکہ امت مسلمہ کی بقا، سلامتی اور استحکام انتہا پسندی اور دہشت گردی کے خاتمے میں ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1