پشاور پولیس نوجوان نسل کو منشیات سے بچاؤ کی خاطر برسر پیکار ہے:شفیع اللہ گنڈا پور

پشاور پولیس نوجوان نسل کو منشیات سے بچاؤ کی خاطر برسر پیکار ہے:شفیع اللہ گنڈا ...

پشاور(کرائمز رپورٹر)کپیٹل سٹی پولیس پشاور نے آئس اور منشیات کے خلاف شہر میں خصوصی آگاہی واک کا اہتمام کیا جس میں شہر بھر کے تاجروں اور مختلف طبقہ ہائے فکر سے تعلق رکھنے والے افراد نے کثیر تعداد میں شرکت کی، واک کے بعد ایس پی سٹی شفیع اللہ گنڈا پور نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پشاور پولیس نو جوان نسل کومنشیات سے بچاؤ کی خاطر بر سر پیکار ہے، انہوں نے شرکاء پر پر زور دیتے ہوئے کہا کہ نوجوان نسل کی بچاو اور آئس کے خلاف جنگ میں تمام طبقہ ہائے فکر کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا،انہوں نے مزید کہا کہ پشاور کی تاجر برادری آئس کے خلاف جاری جہاد میں محکمہ پولیس کے ساتھ اہم کردار ادا کرسکتے ہیں، ایس پی سٹی نے واضح کیا کہ تاجر،عوام اور سول سوسائٹی کے مقدر حلقے منشیات کی تدارک سمیت دیگر جرائم کی روک تھام کے لئے پولیس کا ساتھ دے کر اپنا قومی فریضہ ادا کریں، انہوں نے پولیس کی جانب سے منشیات خصوصا آئس کے خلاف ہونے والی کارروائیوں پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ پشاور پولیس نے امسال 28 کلو گرام سے زائد آئس برآمدکی ہے،انہوں نے مزید کہا کہ پشاور پولیس نے آئس کے خلاف کریک ڈاون کے دوران جہاں ایک طرف شہر میں منشیات کا کاروبار کرنے والے افراد کو گرفتار کرکے جیل کی سلاخوں کے پیچھے دھکیل دیا وہیں شہرمیں قام آئس کی فیکٹری سیل کرنے کے ساتھ ساتھ بین الاقوامی سطح پر آئس کا دھندہ کرنے والے نیٹ ورک کو بھی توڑا ہے، ایس پی سٹی شفیع اللہ گنڈا پور نے مزید کہا کہ منشیات کی لت میں مبتلا افراد کو معاشرے کے کارآمد شہری بنانے کی خاطر بھی پشاور پولیس نے شاہراہوں اور دیگر عوامی مقامات سے منشیات کے عادی افراد کو پولیس تحویل میں شہرکے مختلف ہسپتالوں اور منشیات بحالی مراکز میں داخل کرایا گیاواک میں شریک افراد نے خصوصی بینرز اور پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جس پر آئس اور دیگر منشیات کے خلاف نعرے درج تھے، اس موقع پر شرکاء نے کہا کہ آئس کے خلاف خصوصی آگاہی کا مقصد عوام میں آئس اور منشیات کے خلاف شعور و آگاہی اجا گر کرنا تھا، شرکاء نے مزید کہا کہ نو جوان نسل میں آئس کے بڑھتے ہوئے نا سور کو ملکر ختم کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے، انہوں نے مزید کہا کہ معاشرے کے تمام مقتدر حلقے متحد ہو کر آ ئس کو ختم کرنے میں کلیدی کردار ادا کر سکتے ہیں

مزید : پشاورصفحہ آخر /علاقائی