واٹربورڈ کو منافع بخش ادارہ بنانے کیلئے اقدامات کیے جائیں،سعید غنی

واٹربورڈ کو منافع بخش ادارہ بنانے کیلئے اقدامات کیے جائیں،سعید غنی

کراچی (اسٹاف رپورٹر ) وزیر بلدیات سندھ و چیئرمین کراچی وار اینڈ سیوریج بورڈ سعید غنی نے کہا ہے کہ کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ کو اپنے پیروں پر کھڑا کرنے اور اس ادارے کو ایک منافع بخش ادارہ بنانے کے ساتھ ساتھ عوام کو اس ادارے سے وابستہ توقعات کو پورا کرنے کے لئے تمام اقدامات کو بروئے کار لایا جائے گا۔ قانون کے مطابق 9 فیصد ٹیرف میں اضافے کی منظوری دی جارہی ہے لیکن اس حوالے سے صنعتکاروں کے تحفظات کے ساتھ ساتھ یہ بھی دیکھا جائے کہ اگر یہ اضافہ اگر صنعتوں پر لاگو نہ کیا جائے تو ادارے کوکتنا نقصان جبکہ ٹیرف نہ بڑھانے سے صنعتوں کو کتنا فائدہ ہوتا ہے اور اس کی مکمل رپورٹ یکم جولائی 2019 سے قبل گورننگ باڈی کے اجلاس میں پیش کی جائے۔ ادارے کے 2015 میں اہڈہاک ملازمین کا معاملہ عدالت کے فیصلے اور انسانی بنیادوں پر بھی دیکھا جائے اور اس سلسلے میں کمیٹی کی جانب سے ان ملازمین کی بھرتی کو اشتہارات کے ذریعے دوبارہ درخواستیں طلب کرکے ان 704 ملازمین کو پروسیس کے ذریعے ازسر نو ملازمت کی فراہمی کا موقع دیا جائے گا۔ این ایل سی کو بلک میں پانی کی واٹر ٹینکرز کے ذریعے ہونے والی فراہمی کے معاہدے میں آئندہ تین سال کی توسیع کی گورننگ باڈی اجازت دے رہی ہے اور ان کے نرخوں کو بھی رئیوائس کیا جارہا ہے۔ جبکہ سب سوائل واٹر (زیر زمین پانی) کی لائسسنگ اور ان کی فیسوں کے حوالے سے سپریم کورٹ کے نئے آنے والے فیصلے کی روشنی میں لاءڈپارٹمنٹ سے مشاورت کی جائے گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کے روز کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ کی گورننگ باڈی کے اجلاس کے دوران کیا۔ اجلاس میں سیکرٹری بلدیات سندھ سید خالد حیدر شاہ، ایم ڈی واٹر بورڈ اسد اللہ خان،ا راکین گورننگ باڈی ایم پی اے راجہ رزاق، تمام ڈسٹرکٹ کے چیئرمین، پی اینڈ ڈی ڈپارٹمنٹ کے ممبرخالد محمد صدیق، ایڈیشنل سیکرٹری انڈسٹریز زبیر پرویز، کے پی ٹی کے چیئرمین کے متبادل رکن احمد سمیع احمد، کراچی چیمبر آف کامرس اور ملٹری لینڈ اینڈ اسٹیٹ کے ممبرز کے علاوہ واٹر بورڈ کے اعلیٰ افسران نے شرکت کی۔ گورننگ باڈی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے صوبائی وزیر و چیئرمین واٹر بورڈ سعید غنی نے کہا کہ ہماری تمام تر کوشش ہونی چاہیے کہ ہم اس ادارے کو مالی طور پر مستحکم کریں اور جس مقصد کے لئے اس ادارے کو قائم کیا گیا ہے اس کو نہ صرف پورا کیا جائے اور عوام کو پانی اور سیوریج کے حوالے سے زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کی جائے۔ اجلاس میں گذشتہ ہونے والی گورننگ باڈی کے اجلاس کے ایجنڈے کی منظوری دے دی گئی جبکہ زیر زمین پانی کے حوالے سے لائسنس کے اجراءاور ان کی فیسوں کے شیڈول پر ایم ڈی واٹر بورڈ نے تفصیلی بریفنگ دی

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر