مساجد اور نمازیوں پر بھی پابندیاں ختم کی جائیں،حافظ عاکف سعید

مساجد اور نمازیوں پر بھی پابندیاں ختم کی جائیں،حافظ عاکف سعید

  

لاہور (نمائندہ خصوصی) مساجد اور نمازیوں پر بھی پابندیاں ختم کی جائیں یہ بات تنظیم اسلامی کے امیر حافظ عاکف سعید نے ایک بیان میں کہی۔ اُنھوں نے کہا کہ دنیوی معاملات کو درست کرنے کے لیے حکومت نے کمرشل سرگرمیوں کی اجازت دے دی ہے لیکن مساجد اورنمازیوں کے حوالے سے پابندیاں ابھی ختم نہیں ہوئیں۔ اُنھوں نے کہا کہ حکومت بوڑھے لوگوں پر مسجد جانے کی پابندی اور نمازیوں کے درمیان فاصلے کے فیصلے پر بھی اب نظر ثانی کرے۔

اُنھوں نے کہا کہ دنیا میں ہمارے ضعف اور کمزوری کی وجہ بے زری نہیں ہے بلکہ روحانیت سے دوری اور اللہ تعالیٰ کے احکامات کی نافرمانی ہے۔ اُنھوں نے کہا کہ رمضان المبارک کا تیسرا اور اہم ترین عشرہ شروع ہونے کو ہے لہٰذا تمام چھوٹی بڑی مساجد میں اعتکاف کا اہتمام ضرور ہونا چاہیے۔ البتہ فرض کفایہ ہونے کی وجہ سے اجتماعی اعتکاف کرنے اور شہر اعتکاف بسانے سے اجتناب کیا جائے۔اُنھوں نے کہا کہ کشمیر میں بھارت کا ظلم و ستم اور درندگی اپنے عروج پر ہے۔ ریاض نائیکو کی شہادت بہت بڑا المیہ ہے لیکن مسلسل یہ بہتا ہوا خون بالأخر بھارت کوبڑا مہنگا پڑے گا اور کشمیر میں آزادی کا سورج بہت جلد طلوع ہوگا۔ان شاء اللہ! اُنھوں نے کہا کہ کشمیریوں سے بھارت کے اس غیر انسانی اور وحشیانہ سلوک پر دنیا ٹس سے مس نہیں ہو رہی۔ اُنھوں نے کہا کہ مشرقِ وسطیٰ کے مسلمان ممالک بھارت پر تجارتی پابندیاں عاید کریں تو بھارت منہ کے بل آ گرے گا۔ لیکن اُفسوس کہ مسلمان ممالک صرف زبانی جمع خرچ پر اکتفا کر رہے ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -