دبستانِ اقبال فیصل آباد،ایک تعارف

دبستانِ اقبال فیصل آباد،ایک تعارف

                                علامہ محمد اقبال عالم اسلام کے عظےم مفکر،دانشور،فلسفی اور شاعر کے طور پر جانے جاتے ہےں۔ان کی شاعری کثےر الجہات ہونے کی بنا پر زمانے کی ضرورت سمجھی جاتی رہی ہے اور سمجھی جاتی رہے گی۔علامہ کی شاعری بچوں کے لئے دعائےہ نظموں کی صورت مےں، نوجوانوں کے لئے جوش ولولہ، بلندنگاہی ،کردار سازی کے حوالے سے تحرےک کا درجہ رکھتی ہے۔ بڑوں کے لئے علامہ مرحوم مردمومن ،عشق رسول، امت مرحومہ کی عظمت رفتہ کے نوحہ خواں ہونے کے ساتھ ساتھ امےد،جرات ،بہادری اور بلند ہمتی جےسی خوبےوں کے علمبردار نظر آتے ہےں۔علامہ کی شاعری آفاقی ،ان کا فکراسلامی اور انقلابی ،ان کی نگاہ دور بےں بھی ،خود بےں بھی ،جہاں بےں ہونے کے ساتھ ساتھ خدا بےں تھی،اگر چہ انہوں نے مشرقی اور مغربی تعلےم حاصل کی ،مگر اپنا رشتہ مشرقیت اور اسلام سے نہےں ٹوٹنے دےا،فرماتے ہےں :

زمستانی ہوا مےں تھی گرچہ شمشےر کی تےزی

نہ چھوٹے مجھ سے لندن مےں بھی آداب سحر خےزی

مَےں سردست علامہ مرحوم کی شاعری اور فکر پر مضمون نہےں لکھ رہا،بلکہ ان اداروں اور تنظےموں مےں سے اےک دبستان اقبال کا تذکرہ کرنا چاہتا ہوں جو فکر اقبال کی تروےج مےں کوشا ںہےں۔مرکزی مجلس اقبال اور اس کی ذےلی شاخےں گرانقدر خدمات سرانجام دے رہی ہےں،کسی شہر مےں ےہ تنظےمےں تہاےت مستعد اور سرگرم عمل ہےں اور کہےں ےار لوگ محوجرسِ کارواں ہےں،بقول ضمےر جعفری مرحوم ہم سال مےں اےک بار مجلس اقبال کرتے ہےں اور باقی جو کر تے ہےں ،وہ قوال کرتے ہےں “۔

ضرورت محسوس کی گئی کہ فکر اقبال جس نہج پر ابلاغ کی متقاضی ہے ،وہ نظر نہےں آرہی ،9نومبر اور 21 اپرےل کے اخبارات کے ضمیمے،رےڈےو اور ٹےلی وےژن پر خاص پروگرام علامہ مرحوم کے مقام وعظمت کے ساتھ کسی طور بھی انصاف پہ مبنی نہےں ہےں،فےصل آباد مےں چند اہل فکر ونظر احباب نے تےن برس قبل درس اقبال کا سلسلہ شروع کےا،حفظ الرحمن کلےم نے،جو اےک متحرک علمی شخصےت اور شیدائی اقبال ہےں، احباب کو جمع کرکے پروفےسر مفتی عبدالرﺅف سے درس اقبال کا آغاز کےا ۔اہل علم لوگوں کی ےہ مختصر سی جماعت ابتداً پروفےسر رمضان ،پروفےسر عبدالخالق ،محمد بشےر ہرل اور نجم الدےن پر مشتمل تھی جو پروفےسر مفتی عبدالرﺅف سے استفادہ کرتے تھے ۔مفتی عبدالرﺅف مقامی کالج مےں اقبالےات کے پروفےسر تھے ،آپ عربی ،فارسی اردو اور انگلش پر ےکساں دسترس رکھتے تھے۔شستہ لہجے مےں گفتگو فرماتے اور علمی موشگافےوں اور فلسفےانہ مباحث کو آسان انداز مےں پےش کرنے مےں ملکہ رکھتے تھے ۔

گزشتہ برس مفتی صاحب قضائے الٰہی سے وفات پاگئے تو درس اقبال کا سلسلہ منقطع ہوگےا ،مگر حفظ الرحمن کلےم کو کسی کل چےن نہ آےا وہ مفتی مرحوم کا متبادل ڈھونڈنے مےں مختلف علماءفضلاسے رابطے کرتے رہے۔ چار ماہ کی صحرا نوردی کے بعد انہوں نے اےک ہےرا تلاش کرلےا اور بآلاخر درس اقبال کے منقطع سلسلے کو ازسر نوشروع کرنے مےں کامیاب ہو گئے۔ پروفےسر ڈاکٹر محمد آصف اعوان کی شکل مےں مفتی عبدالرﺅف صاحب کامتبادل مل گےا اور فکر اقبال کے نام سے اےک مختصر سی تنظےم کی داغ بےل ڈالی گئی ۔پروفےسر اعوان اقبالےات مےں پی اےچ ڈی ہےں۔علامہ اقبال کے حوالے سے سات کتابوں کے مصنف ہےں۔پروفےسر محمد آصف اعوان مقامی کالج مےں تدرےس کے فرائض سرانجام دےتے ہےں۔آپ جاذب نظر شخصےت کے مالک ،زبان وبےان پر قدرت رکھنے والے ،الفاظ کی ادائےگی اور انتخاب مےں اپنا ثانی نہےں رکھتے ،گفتگو مےں ٹھہراﺅ، لہجے مےں متانت،فکر مےں گہرائی اور زبان کی شرےنی آپ کے دوگھنٹے کے درس اقبال مےں حاضرےن کو محو رکھتی ہے۔

پروفےسر اعوان صاحب کا رابطہ لاہور مےں قائم دبستان اقبال کے منتظمےن سے ہوا۔جس کے سربراہ ڈاکٹر جاوےد اقبال ہےں۔دبستان اقبال لاہور روائتی تنظےموں سے مختلف ٹھوس علمی کام پر ےقےن رکھتی ہے سکولوں، کالجوں اور یونیورسٹیوں میں اقبال مرکز کا قےام ، پھر گاہے بگا ہے درس اقبال کا سلسلہ ان کے پروگرام کا حصہ ہےں۔ پروفےسر اعوان نے فکر اقبال کا نام بدل کر دبستان اقبال رکھنے کی تجوےزدی تو احباب نے اس پر اتفاق کےا ،ےوں دبستان اقبال فےصل آباد وجود مےں آگےا۔

دبستان اقبال فےصل آباد کے صدر پروفےسر ڈاکٹر محمد آصف اعوان ،حفظ الرحمن کلےم جنرل سےکرٹری ،محمد بشےر ہرل سےنئر نائب صدر محمداحمد فےروز نائب صدر، انعام الٰہی جائنٹ سےکرٹری ،پروفےسر محمد رمضان صاحب فنانس سےکرٹری،جبکہ نشرواشاعت کا قلمدان جواں سال طالب علم محمد احسن بھٹی کے حصے مےں آےا،مشاورت کے لئے اےک مجلس عاملہ بھی تشکےل دی گئی ہے۔دبستانِ اقبال کے زےر انتظام فےصل آباد کالج آف کامرس جڑانوالہ روڈ مےں ہر جمعہ کو بعدنماز مغرب درس اقبال کا اہتمام ہوتا ہے، جس مےں شرکت کی دعوت عام ہے ۔کالج کے مہتم پروفےسر قاری عبدالخالق درس کے لئے جملہ سہولتیں بلامعاوضہ فراہم کرتے ہےں۔دبستان اقبال فےصل آباد نے شہر کے معروف تعلےمی اداروں کے ساتھ مضاہمت کی ےاد داشتوں پر دستخط کئے ہےں اور ڈاکٹر آصف اعوان اور دےگر احباب درس اقبال کے درس مقرر کئے جاتے ہےں، گوےا سبھی اہل علم حضرات فکر اقبال کو پھےلانے مےں اپناکردار ادا کررہے ہےں۔

مختلف تعلےمی اداروں نے اس پروگرام کو پسند کےا ہے اور پذےرائی کا سلسلہ جاری ہے ۔گورنمنٹ اسلامےہ کالج فےصل آباد ،وار ارقم سکولز ،سٹی کالج ،گورنمنٹ ڈگری کالج گوجرہ سمےت بہت سے ادارو ں مےں اقبال مرکزقائم کئے جا چکے ہےں۔ نومبر2013 ءمےں مختلف تقارےب کا شےڈول ترتےب دےا جا چکا ہے ۔دبستان اقبال لاہور سے ڈاکٹر جاوےد اقبال کے چھ خطبات ”سکائپ“کے ذرےعے زرعی ےونےورسٹی مےں براہ راست دکھائے جائےں گے۔اس سلسلے مےں تمام تےارےاں مکمل کرلی گئی ہےں۔ ٭

مزید : کالم