ڈھونگ انتخابات مسئلہ کشمیر کی متنازعہ حیثیت تبدیل نہیں کر سکتے‘ میر واعظ

ڈھونگ انتخابات مسئلہ کشمیر کی متنازعہ حیثیت تبدیل نہیں کر سکتے‘ میر واعظ

سرینگر(اے پی پی) مقبوضہ کشمیر میں کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق نے کہا ہے کہ مقبوضہ علاقے میں ڈھونگ انتخابات جموں و کشمیر کی متنازعہ حیثیت پر اثر انداز نہیں ہو سکتے ہیں۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق حریت چیئرمین نے سرینگر میں ایک انٹرویو میںکہاکہ انتخابات ایک انتظامی مسئلہ ہیں اور انتظامی تبدیلیاں مسئلہ کشمیر کی حیثیت پر اثر انداز نہیں ہو سکتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کل جماعتی حریت کانفرنس نے ہمیشہ کہا ہے کہ انتخابات غیر اہم ہیں اور وہ اس حقیقت کو مسلسل اجاگر کرتے رہیں گے کہ اس تنازعے کاسیاسی حل چاہتے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ انتخابات 1947ءسے منعقد ہو رہے ہیں تاہم مسئلہ کشمیر وہیں کا وہیں موجود ہے۔ میر واعظ نے کہا کہ کشمیریوں نے انتخابات کو اپنے حق خود ارادیت کے متبادل کے طور پرمسترد کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر ایک سیاسی مسئلہ ہے جسے اقوام متحدہ کی متعلقہ قراردادوں کے مطابق سہ فریقی مذاکرات کے ذریعے حل کیا جا سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سابق بھارتی آرمی چیف جنرل وی کے سنگھ کے حالیہ انکشافات جس میںانہوںنے کہا ہے کہ نام نہاد وزرا اور منتخب نمائندے فوج کے پے رول پر ہیں نے نام نہاد انتخابات کی پول کھول دی ہے۔کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین نے پاکستان اور بھارت سے کہاکہ وہ وہ اس دیرینہ تنازعے کے حل کیلئے مذاکرات دوبارہ شروع کریں۔ انہوں نے کہا کہ مذاکرات کو بامعنی اور نتیجہ خیز بنانے کےلئے اس عمل میں کشمیریوں کی شمولیت پر زور دیا۔ انہوںنے کہاکہ گزشتہ کئی برسوں سے دوطرفہ مذاکرات ناکام ثابت ہوئے ہیں لہذا یہ اہم وقت ہے کہ تنازعہ کے تینوں فریقوں کو مذاکرات میں شامل ہونا چاہئے۔

مزید : عالمی منظر