تین نومبر2007ءکی ایمرجنسی ، ایف آئی اے نے پرویز مشرف سے تحقیقات کا فیصلہ کرلیا، ای سی ایل سے نام نہ نکالنے کی سفارش

تین نومبر2007ءکی ایمرجنسی ، ایف آئی اے نے پرویز مشرف سے تحقیقات کا فیصلہ ...
تین نومبر2007ءکی ایمرجنسی ، ایف آئی اے نے پرویز مشرف سے تحقیقات کا فیصلہ کرلیا، ای سی ایل سے نام نہ نکالنے کی سفارش

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) فیڈرل انوسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے ) نے تین نومبر 2007ءکی ایمرجنسی سے متعلق تحقیقات کی غرض سے پرویز مشرف کانام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) سے نام نہ نکالنے کے لیے وزارت داخلہ کو خط لکھ دیاہے ۔ سابق فوجی صسدر پرویز مشرف 6ماہ 24 دن بعد ضمانت پر رہا ہوئے ہی تھے کہ اب ایف آئی اے نے 3 نومبر کی ایمرجنسی لگا کر آئین توڑنے کے الزام پر ان سے پوچھ گچھ کا فیصلہ کر لیا ہے ۔ ذرائع کے مطابق ایف آئی اے کے ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل خالد قریشی کی سربراہی میں انکوائری ٹیم سابق صدر پرویزمشرف سے پوچھ گچھ کے لیے ان کی رہائش گاہ پر جائے گی ، سابق صدر کو درپیش سیکیورٹی خدشات کے باعث ایف آئی اے ہیڈکوارٹرز نہیں بلایا جارہا۔ ذرائع کے مطابق ایف آئی اے نے سابق صدر پرویز مشرف کا نام ای سی ایل سے نہ ہٹانے  کے لیے وفاقی سیکریٹری داخلہ کو خط بھی لکھ دیا ہے تا کہ کہیں وہ بیرون ملک نہ چلے جائیں اور غداری کیس کی تفتیش ادھوری نہ رہ جائے۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں