امریکہ باآسانی افغانستان سے نکلنے کیلئے قبائلی علاقوں میں شورش چاہتاہے : عمران خان

امریکہ باآسانی افغانستان سے نکلنے کیلئے قبائلی علاقوں میں شورش چاہتاہے : ...
امریکہ باآسانی افغانستان سے نکلنے کیلئے قبائلی علاقوں میں شورش چاہتاہے : عمران خان

  

پشاور(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ حکیم اللہ محسود کی ہلاکت پاکستان کے طالبان سے ہونے والے ممکنہ مذاکرات کی کوششوں کو تباہ کرنا ہے اور اس کے پیچھے امریکہ ہے۔غیر ملکی خبررساں ادارے کو انٹرویو دیتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ واشنگٹن جان بوجھ کر طالبان سے ممکنہ مذاکرات کو سبوتاڑ کررہا ہے،ڈرون حملہ کرکے حکیم اللہ محسود کو مارنا اسی منصوبے کی ایک کڑی ہے،امریکہ اگر صرف حکیم اللہ محسود کو مارناچاہتاتھاتوپہلے بھی مارسکتاتھالیکن جان بوجھ کر ایسے وقت کاانتخاب کیاجب وہ امن عمل کیلئے اکٹھے تھے۔عمران خان نے کہا کہ اوباما حکومت یہ سوچتی ہے کہ اگر پاکستانی قبائلی علاقوں میں شورش چلتی رہے گی تو شرپسندوں کے افغانستان جاکر امریکی فوجیوں سے لڑنے کے امکانات کم سے کم ہوں گے اور یہی سوچ رکھتے ہوئے امریکہ باآسانی افغانستان سے نکل جانا چاہتا ہے۔عمران خان نے کہا کہ طالبان سے مذاکرات کی کوششوں میں وہ وزیراعظم نواز شریف کے ساتھ کھڑے ہیں اورڈرون حملے امریکہ مخالف رائے قائم کرنے کے علاوہ کچھ نہیں کررہے۔ایک سوال کے جواب میں عمران خان نے بتایاکہ یہ گوریلا جنگ ہے،کامیابی نہیں ہوسکتی بالکل اسی طرح جس طرح 80 برس پہلے برطانیہ کو ناکامی ملی تھی۔

مزید : پشاور /اہم خبریں