ناراض بلوچوں کو قومی دھارے میں شامل ہونے کی دعوت

ناراض بلوچوں کو قومی دھارے میں شامل ہونے کی دعوت

بلوچستان کے مزید دوسو سے زائد فراریوں نے سول اور فوجی قیادت کی طرف سے انہیں قومی دھارے میں شامل کرنے کی یقین دہائی پر ہتھیار ڈال دیئے ہیں۔ اس سلسلے میں سول سیکرٹریٹ بلوچستان میں ایک خصوصی تقریب منعقد ہوئی ، جس میں وزیر اعلیٰ بلوچستان ثناء اللہ زہری اور کمانڈر سدرن کمانڈ لیفٹینٹ جنرل عامر ریاض نے گلے سے لگا کر ان کا خیر مقدم کیا۔ اس موقع پر وزیر اعلیٰ ثناء اللہ زہری نے ناراض بلوچ لیڈر برا ہمداغ بگٹی کوبھی واپس وطن آنے کی دعوت دیتے ہوئے کہا کہ جو لوگ بھی ملک سے وفاداری کا اظہار کریں گے انہیں قومی دھارے میں شامل کرتے ہوئے نظام زندگی چلانے کے لئے وسائل مہیا کئے جائیں گے۔ کمانڈر عامر ریاض نے ہتھیار ڈالنے والوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تمام واپس آنے والوں کا خیر مقدم کیا جائے گا۔ جولوگ بھائیوں کو آپس میں لڑانے کی سازش کررہے ہیں، انہیں ہر صورت ناکام بنایا جائے گا۔ یہ بات نہایت خوش آئند ہے کہ بلوچستان کے پہاڑوں سے ایک اور گروپ نے ہتھیار ڈال کر اپنے وطن اور حکومت سے وفاداری کا اظہار کیا ہے۔ اس سے پہلے بھی فراریوں کے متعدد گروپوں کی طرف سے ہتھیار ڈالے جا چکے ہیں اس سے ثابت ہوتا ہے کہ سول اور فوجی قیادت ناراض لوگوں کو قومی دھارے میں دوبارہ شامل کرنے کیلئے موثر اقدامات کررہی ہے۔ سابق وزیر اعلیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبدالمالک نے بھی ان سے تفصیلی مذاکرات کئے تھے۔ خدا کرے کہ سول اور فوجی قیادت کی کوششیں رنگ لائیں ۔

مزید : اداریہ