چوہنگ، قتل ہونے والے 35سالہ بابر علی کی لاش نہیں مل سکی

چوہنگ، قتل ہونے والے 35سالہ بابر علی کی لاش نہیں مل سکی

لاہور(وقائع نگار) چوہنگ کے علاقہ میں بیوی اور اس کے آشنا کے ہاتھوں قتل ہونے والے 35سالہ بابر علی کی لاش تاحال نہ مل سکی ،پولیس نے ملزمہ اور اس کے ساتھیوں سے تفتیش کے ساتھ ساتھ مزید افراد کو بھی شامل تفتیش کر لیا ہے ۔ذرائع کے مطابق تین ماہ قبل تنویر احمد نے تھانہ چوہگ میں درخواست دی تھی اس کے بھائی بابر علی کو نامعلوم ملزمان نے قتل کرنے کی نیت سے اغواکرلیا ہے۔ جس پر مقدمہ 989/16 مورخہ 15.07.16جرم365ت پ تھانہ چوہنگ لاہور برخلاف نامعلوم ملزمان درج رجسٹر ہوا۔مقدمہ کی تفتیش سی آ ئی اے سٹی کو تو الی کے سپر د کر دی گئی جنہوں نے مغوی کی بیوی نگینہ بی بی کو شامل تفتیش کیا جس نے دوران تفتیش بتا یا کہ اس نے اپنے آشنا محمد عثمان ،لیاقت علی اور سلیمان نور کے ساتھ مل کر اپنے شوہر بابرعلی کو قتل کرکے نعش دریائے راوی میں پھینک دی تھی ۔ ملزم عثمان نے بابر کو قتل کے وقوعہ میں ساتھ دینے کے عوض اپنے دوست سلیمان نورکو نقدی 20 ہزار روپے دئے تھے ۔پولیس نے ملزمہ نگینہ بی بی کی نشاندہی پر مغوی کی نعش برآمد کرنے کی کوشش دو روز سے شروع کر رکھی ہیں لیکن تاحال اس حوالے سے کوئی کامیابی حاصل نہیں ہوئی ہے ۔پولیس نے ملزمان سے تفتیش کا دائرہ وسیع کر دیا ہے اور مزید افراد کو شامل تفتیش کر لیا ہے ۔ذرائع کے مطابق تفتیشی افسران کو شک ہے کہ قتل کی اصل وجہ مقتول کی جائیداد ہے جس کو مقتول کی بیوی اور اس کا آشنا مل کر حاصل کرنا چاہتے تھے ۔اس حوالے سے مزید تفتیش کی جا رہی ہے جلد ہی اصل حقائق سامنے آ جائیں گے۔

مزید : علاقائی