جج چودھری اعظم کی خواتین ڈاکٹروں کو بلیک میل کرنے کے مقدمے کی سماعت سے معذرت

جج چودھری اعظم کی خواتین ڈاکٹروں کو بلیک میل کرنے کے مقدمے کی سماعت سے معذرت

لاہور(نامہ نگار )انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج چودھری اعظم نے فیس بک اور انٹرنیٹ کے ذریعے خواتین ڈاکٹروں کو بلیک میل کرنے کے مقدمے کی سماعت سے معذرت کر لی، جرح کے لئے پیش نہ ہونے پر دو متاثرہ لیڈی ڈاکٹروں کے وارنٹ گرفتاری کو عدالت کے روبرو چیلنج کر دیا گیا۔عدالت کے روبرو کیس کی سماعت شروع ہوئی تو ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے سیکرٹری ڈاکٹر سلمان کاظمی نے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ مقدمے کے گواہوں کے بیانات کی ترتیب متعین کرنا دہشت گردی عدالت کا اختیار نہیں۔

،انہوں نے کہا کہ استغاثہ کے گواہوں کے بیانات پہلے قلمبند ہونے سے ملزم کو فائدہ پہنچ سکتا ہے اسی لئے متاثرہ ڈاکٹرز جرح کے لئے پیش نہیں ہو رہیں۔انہوں نے عدالت کو آگاہ کیا کہ دہشت گردی عدالت کی جانب سے گواہوں کے بیانات کی ترتیب متعین کرنے کے حکم کو عدالت عالیہ لاہور میں چیلنج کیا گیا ہے ،متاثرہ لیڈی ڈاکٹرز کے جرح کے لئے پیش نہ ہونے پر جاری کئے گئے وارنٹ گرفتاری خارج کئے جائیں تاہم انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج چودھری اعظم نے ذاتی وجوہات کی بناء پر کیس کی سماعت سے معذرت کر لی،عدالت نے مقدمے کی فائل دہشت گردی عدالت کے انتظامی جج کو بھجواتے ہوئے معاملہ دوسری عدالت میں بھجوانے کی سفارش کر دی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4