حبس بے جا کی درخواست میں لڑکی کا مبینہ شوہر پر بداخلاقی کا الزام

حبس بے جا کی درخواست میں لڑکی کا مبینہ شوہر پر بداخلاقی کا الزام

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہورہائیکورٹ کے مسٹر جسٹس شہباز علی رضوی کے روبرو حبس بے جا کی درخواست میں لڑکی نے مبینہ شوہر پر بداخلاقی کا الزام عائد کرتے ہوئے والدین کے ساتھ جانے کی خواہش کا اظہار کردیا جس پر عدالت نے اسے والدین کے ہمراہ جانے کی اجازت دے دی ۔درخواست گزار الماس بی بی کی جانب سے موقف اختیار کیاگیا تھا کہ اسکی بیٹی فاطمہ کو کاشف نامی نوجوان نے اغواء کرلیا ہے لہذا اسکی بیٹی کو بازیاب کروا کر اسکے ساتھ جانے کی اجازت دی جائے ۔جس پر لڑکی کو بازیاب کروا کر عدالت میں پیش کیا گیا تو فاطمہ نے بتایا کہ اس نے کاشف کے ساتھ پسند کی شادی نہیں کی بلکہ وہ اسے ورغلا کر لے گیا تھا جہاں وہ اسے بداخلاقی کا نشانہ بناتا رہااور شادی نہیں کی ۔اب وہ اپنے والدین کے ہمراہ جانا چاہتی ہے ۔کاشف کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ اسکے موکل نے فاطمہ کو اغواء نہیں کیا بلکہ اس سے پسند کی شادی کی ہے ۔فاضل عدالت نے فریقین کے وکلاء کے دلائل اور لڑکی کے بیان کے بعد اسے اپنے والدین کے ہمراہ جانے کی اجازت دے دی ۔

مزید : صفحہ آخر