متاثرہ خاندان کوشہید پیکج نہ دینے پرمتعلقہ حکام کوشوکازنوٹس

متاثرہ خاندان کوشہید پیکج نہ دینے پرمتعلقہ حکام کوشوکازنوٹس

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ کے چیف جسٹس مظہر عالم میانخیل اورجسٹس محمد غضنفرخان پرمشتمل دورکنی بنچ نے عدالتی احکامات کے باوجودمتاثرہ خاندان کو شہید پیکج نہ دینے پر سیکرٹری سیفران ٗ سیکرٹری پلاننگ وڈویلپمنٹ سیکرٹری لاء اینڈآرڈر اورپولیٹکل ایجنٹ مہمند ایجنسی کو شوکاذ نوٹس جاری کردیاہے فاضل بنچ نے یہ احکامات گذشتہ روز عمادانجم درانی اورہاشم مینگل ایڈوکیٹس کی وساطت سے دائرشمس القمراورامیرزادہ سمیت 25درخواست گذاروں کی توہین عدالت کی درخواست پر جاری کئے اس موقع پر عدالت کو بتایاگیاکہ درخواست گذاروں کی رٹ درخواستوں پر پشاورہائی کورٹ نے 19نومبر2015ء کوشہداپیکج دینے کے احکامات جاری کئے تھے تاہم ایک سال کاعرصہ گذرنے کے باوجود عدالتی احکامات پرعملدرآمد نہیں ہورہا ہے اورمتاثرہ خاندان پی اے کے دفاتر کے چکرلگانے پرمجبورہیں جبکہ ان خاندانوں کے سربراہوں نے دہشت گردی کے خلاف جنگ کے دوران مختلف واقعات میں اپنی جانوں کی قربانی دی ہے اوران کے خاندان اب کسمپرسی کی زندگی گذارنے پرمجبورہیں لہذامتعلقہ حکام کے خلاف توہین عدالت کی کاروائی عمل میں لائی جائے فاضل بنچ نے ابتدائی دلائل کے بعد سیکرٹری سیفران ٗ سیکرٹری پلاننگ و ڈویلپمنٹ سیکرٹری لاء اینڈآرڈر اورپولیٹکل ایجنٹ مہمند ایجنسی کو شوکاذ نوٹس جاری کردیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر