ریگولیٹری ڈیوٹی ودہولڈنگ ٹیکس صوابدیدی اختیارات واپس لیے جائیں ، آل پنجاب چیمبرز ایسوسی ایشز

ریگولیٹری ڈیوٹی ودہولڈنگ ٹیکس صوابدیدی اختیارات واپس لیے جائیں ، آل پنجاب ...

  



لاہور(کامر س رپورٹر) آل پنجاب چیمبرز اور ٹریڈ ایسوسی ایشنز نے لاہور چیمبر کے زیر اہتمام کنونشن میں حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ ریگولیٹری ڈیوٹی، بینکوں سے لین دین پر ودہولڈنگ ٹیکس اور ٹیکس حکام کے صوابدیدی اختیارات فورا واپس لیے جائیں، اگر یہ جائز مطالبات تسلیم نہ کیے گئے پارلیمنٹ کے سامنے اکٹھا ہونگے۔ اس موقع پر لاہور چیمبر کے صدر ملک طاہر جاوید، نائب صدر ذیشان خلیل، شیخ محمد آصف، میاں شفقت علی، شاہد حسن شیخ، محمد علی میاں، سہیل لاشاری، عبدالباسط، آفتاب احمد وہرہ، سید محمود غزنوی، ایگزیکٹو کمیٹی اراکین آل پنجاب چیمبرز اور تجارتی ایسوسی ایشنز کے عہدیداروں اور نمائندوں نے خطاب کیا۔ کنونشن کے شرکاء نے ایک مشترکہ اعلامیہ بھی جاری کیا جس میں حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ ریگولیٹری ڈیوٹی ، بینکوں سے لین دین پر عائد ودہولڈنگ ٹیکس اور پچھلے چار فنانس بلز کے ذریعے ان لینڈ ریونیو اور دیگر عملے کو دئیے گئے بے پناہ صوابدیدی اختیارات فورا واپس لیے جائیں۔ لاہور چیمبر کے صدر ملک طاہر جاوید نے کہا کہ ودہولڈنگ ٹیکس سے صرف تاجر برادری ہی متاثر نہیں ہوئی بلکہ بینکنگ سیکٹر کوبھی بہت دھچکا لگا ہے،کاروباری لوگ بینکنگ نظام کو چھوڑ کر پرانے طریقے سے بزنس کر رہے ہیں جس سے غیر دستاویزی معیشت پروان چڑھ رہی ہے، ودہولڈنگ ٹیکس کے نفاذ کا نتیجہ حکومت کی اپنی توقعات کے برعکس نکلا ہے لہذا اسے فورا واپس لیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں براہ راست ٹیکسوں کی شرح دوتہائی ہے جو دیگر ممالک کے مقابلے میں بہت زیادہ ہے۔دنیامیں ان ڈائریکٹ ٹیکسز کی تعداد کم اور ڈائریکٹ ٹیکسز کی تعداد بڑھ رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 2012-13 سے لیکر 2015-16 تک محصولات کی مد میں وصولیوں میں تقریباً60% اضافہ ہوا لیکن یہ اعداد وشمار قابل غور ہیں کہ اس اثناء میں ٹیکس فائلرز کی تعداد چودہ لاکھ سے کم ہو کر صرف نو لاکھ رہ گئی ہے جس سے اس بات کا بخوبی اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ FBR اہلکاروں کی موجودہ روش کی وجہ سے پرانے ٹیکس گذار بھی ٹیکس نیٹ سے باہر ہوتے جارہے ہیں اورسارا بوجھ موجودہ ٹیکس گذاروں پر شفٹ کیا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اگر ی صورتحال جاری رہی تو نئے ٹیکس گزار کبھی بھی سسٹم کا حصہ نہیں بنیں گے۔

مزید : کامرس


loading...