فرنیچر کونسل کا پانچ رکنی وفد نمائش میں شرکت کیلئے شنگھائی روانہ ہو گیا

فرنیچر کونسل کا پانچ رکنی وفد نمائش میں شرکت کیلئے شنگھائی روانہ ہو گیا

  



لاہور(کامرس رپورٹر) پاکستان فرنیچر کونسل (ایف سی سی) کا پانچ رکنی وفد 19 ویں چائنہ انٹرنیشنل انڈسٹری فیئر 2017 میں شرکت کیلئے روانہ ہو گیا جو نیشنل ایگزبیشن اینڈ کنونشن سینٹر شنگھائی میں شروع ہو رہا ہے۔ بدھ کو وفد کی روانگی سے قبل ایئر پورٹ پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے پاکستان کے فرنیچر کونسل کے سربراہ میاں کاشف اشفاق نے کہا کہ نمائش میں شرکت سے وفد کو مستقبل کی پالیسیوں کی تیاری، مارکیٹ سٹڈی، نئے مواقع کی تلاش اور پروموشنل کوششوں کے مواقع میسر آئیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاک چین تجارت کے حجم میں عدم توازن کے باوجود پاکستان اور چین کے درمیان اقتصادی اور تجارتی تعلقات کے فروغ کی بڑی گنجائش ہے اور ہماری کاروباری برادری کو چین کی مارکیٹ میں اپنی مسابقت کو فروغ دینے پر توجہ مرکوز کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ انہوں نے تاجروں سے زور دیا کہ چین پاکستان آزاد تجارتی معاہدے (سی پی ایف ٹی اے) کے تحت چین کی طرف سے دی گئی رعایتوں کا مکمل اور فائدہ اٹھانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس حقیقت کے باوجود تجارت میں اضافہ ہوا ہے کہ پاکستانی تاجروں نے دستیاب ٹیرف لائنز کا صرف 3.3 فیصد استعمال کیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان نے 7550 میں سے صرف 253 ٹیرف لائنوں کا استعمال کیا۔

انہوں نے کہا کہ بہترین اور منفرد ڈیزائنوں اور اعلیٰ معیار کی لکڑی کے استعمال کی وجہ سے بیرون ملک منڈیوں میں پاکستانی فرنیچر کی بڑی مانگ ہے۔ اگرچہ چینی مارکیٹوں میں انتہائی سخت مقابلہ کی وجہ سے چین کو فرنیچر کی برآمد مینوفیکچررز کے لئے انتہائی مشکل کام ہے، اس کے باوجود چینی فرنیچر مارکیٹ میں کامیابیاں حاصل کی جا سکتی ہیں۔ میاں کاشف اشفاق نے کہا کہ فرنیچر کی صنعت میں ایک چھوٹی سی شاخ ہونے کے باوجود چین بیرونی فرنیچر کی بڑی مارکیٹ ہے کیونکہ چینی حکومت باغات کے فروغ میں گہری دلچسپی لے رہی ہے جس کے باعث وہاں بیرونی فرنیچر کی بہت زیادہ مانگ ہے اور پاکستانی فرنیچر مینوفیکچررز کو اس شعبے میں قسمت آزمائی کرنی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ چین کے سرکاری اور نجی شعبوں کی کاروباری تنظیموں کے ساتھ بات چیت سے وفد کو کاروباری وسعت کے مواقع میسر آئیں گے جس سے باہمیکاروبار اور تجارتی تعاون کو فروغ حاصل ہو گا۔ پی ایف سی کے چیف ایگزیکٹو نے کہا کہ پاکستان میں بین الاقوامی مارکیٹوں میں جگہ بنانے کی بڑی صلاحیت ہے تاہم فرنیچر کی صنعت کو مضبوط اور مستحکم کرنے کیلئے حکومتی سطح پر سرپرستی کی ضرورت ہے بصورت دیگر اس ضمن میں انفرادی کوششوں سے مطلوبہ نتائج حاصل نہیں ہو سکتے۔ انہوں نے کہا کہ 15 دسمبر سے ایکسپو سینٹر لاہور میں منعقد ہونے والی 9 ویں 3 روزہ انٹیریئرز پاکستان میگا بین الاقوامی نمائش میں شرکت کے لئے بھی چینی ہم منصبوں کو دعوت دی جائے گی۔ سیکرٹری پی ایف سی حامد محمود نے کہا کہ اگر موجودہ حالات میں فرنیچر کی برآمدات سے 8 سے 12 ملین ڈالر سالانہ زرمبادلہ کمایا جا سکتا ہے تو فرنیچر مینوفیکچررز کی طرف سے مؤثر اور مناسب اقدامات اور حکومتی سرپرستی سے ان اعداد و شمار میں قابل ذکر اضافہ کی گنجائش ہے۔

مزید : کامرس


loading...