صحت کے میدان میں انقلابی اقدامات

صحت کے میدان میں انقلابی اقدامات

  



وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی زیر قیادت گزشتہ چار سالوں کی شب و روز کی محنت، منصوبہ بندی، عرق ریزی رنگ لا رہی ہے اور صحت کے میدان میں نمایاں بہتری آئی ہے۔ پنجاب حکومت کے موثر اقدامات کے باعث ایمونائزیشن کی شرح 85فیصد تک پہنچ چکی ہے اورعالمی اداروں کی جانب سے ایمونائزیشن کی شرح میں اضافے کا اعتراف شعبہ صحت پنجاب کی کارکردگی پر اعتماد کا اظہار ہے۔یہ کہنا بے جا نہ ہوگا کہ صحت عامہ کے شعبے میں جاری اصلاحاتی پروگرام پر نمایاں پیشرفت ہو رہی ہے۔ دیہات میں ایمبولینس سروس شروع ہونے سے خواتین کو سہولت ملی ہے اورجنوری تک دیہات میں ایمبولینسوں کی تعداد 450تک بڑھا دی جائے گی۔ پنجاب حکومت نے دیہی وبنیادی مراکز صحت کے لئے ایک ہزار الٹراساؤنڈ مشینیں خریدنے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ ہیپاٹائٹس کے مریضوں کے لئے فلٹر کلینکس بنانے کا آغاز کردیا گیاہے اوران فلٹر کلینکس پر مفت ادویات اور ٹیسٹ کی سہولتیں مہیا کی جا رہی ہیں۔ہیپاٹائٹس کے مریضوں کو ان کے گھروں میں ادویات کی فراہمی کے پروگرام کا آغاز کر دیا گیاہے اور اس پروگرام کا دائرہ کار بتدریج بڑھایا جا رہاہے،وزیراعلی پنجاب کی خصوصی ہداہت ہے کہ ہیپاٹائٹس کے موذی مرض سے بچنے کے لئے احتیاطی تدابیر او رعلاج کے لئے موثر آگاہی مہم چلائی جائے۔ پنجاب حکومت نے سینٹرل نظام کے تحت معیاری ادویات کی خریداری یقینی بنائی ہے۔ دیہی وبنیادی مراکز صحت پر بھی آئندہ ادویات ٹی سی ایس کے ذریعے بھجوانے کا پروگرام وضع کیا گیاہے،اسی طرح پنجاب حکومت نے طبی ٹیسٹوں کے لئے 2جدیدسینٹرل لیبز بنانے کا فیصلہ کیا ہے جن میں سے ایک لیب لاہور او ردوسری ملتان میں بنائی جائے گی۔ تحصیل و ڈسٹرکٹ ہسپتالو ں میں جینٹوریل خدمات کو آؤٹ سورس کرنے کے اچھے نتائج سامنے آئے ہیں اور ہسپتالوں میں دیگر سہولتوں کو بھی ترجیحی بنیادوں پر بہتر بنایا جا رہا ہے ۔اس بات میں کوئی شبہ نہیں کہ وزیراعلیٰ پنجاب کی بدولت صحت عامہ کے شعبے نے درست سمت میں سفر شروع کر دیا ہے،سفر طویل ہے لیکن امید ہے کہ ایک بہترین ٹیم ورک کے طور پر کام کر کے اہداف کو حاصل کرناہے اورعوام کی توقعات کو ہر صورت پورا کرنا ہے۔ایک میٹنگ میں برطانیہ کے بین الاقوامی ترقیاتی ادارے ڈیفڈ کے منیجنگ پارٹنر سر مائیکل باربر نے کہا کہ وزیراعلیٰ شہبازشریف کی قیادت میں پنجاب حکومت نے صحت عامہ کے شعبے میں جاری اصلاحاتی پروگرام میں نمایاں اور متاثرکن کارکردگی دکھائی ہے۔عالمی اداروں کی جانب سے بھی پنجاب حکومت کے اقدامات کی تعریف کی گئی ہے۔انہوں نے کہاکہ پنجاب ہیلتھ ریفارمز روڈ میپ پر انتہائی تیز رفتاری سے عملدرآمد کیا گیاہے اوروزیراعلیٰ شہبازشریف کی قیادت میں جس سپیڈ سے عملدرآمد ہورہاہے اس کی مثال نہیں ملتی۔ وزیراعلی کی پوری ٹیم انتہائی محنت کے ساتھ کام کررہی ہے اوروزیراعلی کا عزم اورجذبہ قابل تعریف ہے۔ برطانوی ماہرین کے مطابق پنجاب حکومت نے ڈرگ ٹیسٹنگ لیبز کے حوالے سے نمایاں پیش رفت کی ہے۔ ڈرگ ٹیسٹنگ لیب لاہور میں ادویات کے نمونوں کی چیکنگ کا نظام انتہائی اعلیٰ معیار کا ہے اور وزیراعلیٰ شہبازشریف کی ذاتی دلچسپی کے باعث اس پروگرام پر پیش رفت قابل ستائش ہے۔ وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کا کہنا ہے کہ صوبے کے عوام کو معیاری ادویات کی فراہمی میرا مشن ہے اور اس مقصد کے حصول کیلئے ڈرگ ٹیسٹنگ لیبز کے نظام کو جدید خطوط پر استوار کیا جا رہا ہے۔ لاہور میں سٹیٹ آف دی آرٹ ڈرگ ٹیسٹنگ لیب شاندار انداز میں کام کر رہی ہے جبکہ راولپنڈی، ملتان، فیصل آباد اور بہاولپور میں بھی ڈرگ ٹیسٹنگ لیبز کو عالمی معیار کے مطابق بنایا جا رہا ہے، اس نظام سے عوام کو معیاری ادویات مہیا ہوسکیں گی اور جعلی و غیر معیاری ادویات کا خاتمہ ہوگا۔ کوالٹی مینجمنٹ سسٹم کے تحت ادویات کے نمونوں کی چیکنگ کا نظام وضع کیا گیا ہے اور ماسٹر ٹرینرز برطانیہ سے تربیت حاصل کر رہے ہیں۔ان ریفارمز کے علاوہ لاہور کے علاقے مناواں میں وزیراعلیٰ پنجاب کے ہاتھوں 100بستروں پر مشتمل گورنمنٹ تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال مناواں کا افتتاح بھی کردیا گیا ہے۔تفصیل کے مطابق مناواں میں پنجاب حکومت نے پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت سٹیٹ آف دی آرٹ ہسپتال بنایا ہے۔اگرچہ ماضی میں یہاں دیہی و بنیادی مراکز صحت موجود تھے، لیکن وہ صرف کاغذوں میں کام کررہے تھے کیونکہ وہاں ڈاکٹر ،نرسیں اور عملے کے ساتھ ادویات بھی غائب تھیں جبکہ عمارتوں میں جانوروں کا بسیرا تھا۔اللہ تعالی کے بے پایاں فضل وکرم اور پنجاب حکومت کی شبانہ روز محنت کے باعث گزشتہ 4برس کے دوران صحت کے میدان میں بے پناہ بہتری آئی ہے اور اب صورتحال ماضی کی نسبت بہترہے تاہم دکھی انسانیت کی خدمت کا سفر ابھی بہت طویل ہے اور صحت عامہ کی سہولتوں کو خوب سے خوب تر بنانے کے لئے بہت کچھ کرناہوگا۔یہ ہسپتال پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کا ایک اعلیٰ شاہکار ہے اور خدمت خلق اور دکھی انسانیت کے سر پر دست شفقت رکھنے کی تصویر ہے۔پنجاب حکومت نے سرکاری ہسپتالوں میں معیاری ادویات کی فراہمی کو یقینی بنایا ہے اور آج پنجاب کے سرکاری ہسپتالوں میں وہ ادویات مل رہی ہیں جو نجی ہسپتالوں میں ملنے والی ادویات سے بہتر ہیں تاہم ہم نے خوب سے خوب تر کی تلاش میں لگے رہنا ہوگا۔ وزیراعلیٰ پنجاب نے ہسپتال کے افتتاح کے موقع پر کہا کہ یہ اللہ تعالی کا احسان اور پنجاب حکومت کی شبانہ روز محنت ہے کہ ایسا شاندار ہسپتال بنایا گیاہے او راس میں تمام تر وسائل پنجاب حکومت نے دئیے ہیں تاہم مینجمنٹ ا نڈس ہیلتھ نیٹ ورک کی ہے اور اس کے چیف ایگزیکٹو آفیسر ڈاکٹر عبدالباری ایک فرشتہ صفت انسان ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 8 ماہ قبل قصور کی ایک مریضہ کا وہ واقعہ تو یاد ہوگا جب وہ لاہور کے مختلف ہسپتالوں میں دھکے کھا کر جناح ہسپتال پہنچی تو اسے علاج ملنے کی بجائے فرش پر لیٹنے پر مجبور ہونا پڑا۔ اس غریب گھرانے نے پرائیویٹ ایمبولینس کے ذریعے مریضہ کو ہسپتال پہنچایا لیکن وہ مناسب علاج نہ ملنے پر دم توڑ گئی۔ میں نے اسی دن سرکاری ہسپتالوں کی ایمبولینسوں کو ریسکیو 1122 کے حوالے کرنے کا فیصلہ کیا اور پنجاب حکومت کے اس اقدام سے ایمبولینسوں کے نظام میں بہتری آئی ہے۔ جو لوگ بے بنیاد الزامات لگاتے تھے کہ پنجاب میں صحت عامہ کے شعبہ میں کام نہیں ہورہا انہیں تو صرف میٹرو اور سڑکیں بنانے کا شوق ہے ،آپ نے بے بنیاد الزامات لگائے اس طرح کے شاندار ہسپتال بنا کر ان کا جواب آپ کو دیاہے۔وزیراعلیٰ پنجاب نے گورنمنٹ تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال مناواں کے لئے سی ٹی سکین مشین کی فراہمی کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ علاقے کے عوام کے لئے جدید ہسپتال بنانے پر صوبائی وزراء، سیکرٹریز صحت، چیف سیکرٹری، چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیات اور اس منصوبے کی تکمیل میں حصہ لینے والے ہر فرد کو دل کی اتھاہ گہرائیوں سے مبارکباد دیتا ہوں۔مناواں ہسپتال کی بدولت پنجاب حکومت اور انڈس ہسپتال کے درمیان تیسرے ہسپتال کی بنیاد رکھی گئی ہے۔ان تمام اقدامات سے یہ امید کی جا سکتی ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی بدولت ہر عام آدمی کو صحت کی سہولت اس کی دہلیز پر مل سکے گی اور ہیلتھ سیکٹر میں اسی طرح انقلابی اقدامات کئے جاتے رہیں گے۔

*******

مزید : ایڈیشن 2


loading...