سیاسی لیڈر کا گن مین ہونے کے باعث پولیس قال بہنوئی کو گرفتار نہیں کر رہی

سیاسی لیڈر کا گن مین ہونے کے باعث پولیس قال بہنوئی کو گرفتار نہیں کر رہی

  



لاہور(خبر نگار) رشتے کے تنازع پر ایف ایس سی کی طالبہ کے قاتل بہنوئی کو سیاسی لیڈر کا گن مین ہونے کی بنا پر پولیس گرفتار نہیں کر رہی ہے۔ مقتولہ کا والد ریٹائرڈ نائب صوبیدار محمد ارشاد فریاد لیکر ’’پاکستان‘‘ کے دفتر پہنچ گیا۔ نارووال کے نواحی قصبہ تنوڈے قیام پور کے رہائشی محنت کش ریٹائرڈ صوبیدار محمد ارشاد نے اپنی بیوی اور بیٹے کے ہمراہ فریاد سناتے ہوئے کہا کہ اُس کی بیٹی 18سالہ لائبہ ایف ایس سی کی طالبہ تھی اور تعلیم کی غرض سے اس کے داماد ذوالفقار علی عرف صابا کے گھر واقع گڈیالہ میں رہتی تھی۔اس کا داماد ذوالفقار علی اُس کی بیٹی لائبہ کی اپنے رشتے دار کے ساتھ زبردستی شادی کرنا چاہتا تھا۔جب اسے علم ہوا تو وہ اپنی بیٹی کو اپنے گھر لے آیا۔ 29اکتوبر کو اس کا داماد ذوالفقار علی اُس کے گھر آیا، اور اُس کی بیٹی کو فائرنگ کرکے قتل کردیا ۔محنت کش ارشاد احمد نے مزید بتایا کہ صدر نارووال پولیس نے مقدمہ درج کررکھا ہے مگرایک سیاسی لیڈر کا گن مین ہونے کی بنا پر پولیس ملزم کو پکڑ نہیں رہی ہے۔ جس کی بنا پر ملزم 10روز سے علاقہ میں نہ صرف سرعام گھوم رہا ہے بلکہ ہمیں قتل کرنے کی دھمکیاں دے رہا ہے۔ ارشاد احمد نے وزیراعلیٰ پنجاب، آئی جی پولیس، آر پی او گوجرانوالہ اور ڈی پی او نارووال سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ مداخلت کرکے ملزم کو گرفتار کروائیں۔

مزید : علاقائی