لڑکی پر تیزاب پھینکنے کے کیس میں مجسٹریٹ کینٹ رانا شہباز کا بیان قلمبند

لڑکی پر تیزاب پھینکنے کے کیس میں مجسٹریٹ کینٹ رانا شہباز کا بیان قلمبند

  



لاہور(نامہ نگار) انسداد دہشت گردی کی عدالت نے ڈیفنس اے میں لڑکی پر تیزاب پھینکنے کے کیس میں مجسٹریٹ کینٹ رانا شہباز کا بیان قلمبندکرنے کے بعد سماعت آج 9نومبر تک ملتوی کردی ہے ۔عدالت میں ڈیفنس اے میں بینش نامی خاتون پر تیزاب پھینکنے کے کیس کی سماعت روزانہ کی بنیادپرکی جا رہی ہے ، گزشتہ روزکیس کے گواہ کینٹ کے مجسٹریٹ رانا شہباز حسن کا بیان قلمبند کیا گیا ۔

،عدالت میں مجسٹریٹ نے بتایا کہ انہوں نے متاثرہ لڑکی بینش اور ملزم عصمت اللہ کا بیان قلمبند کیا تھا، عدالت میں پراسکیوشن نے درخواست دی کہ ایم ایس جناح ہسپتال سے متاثرہ لڑکی بینش کا معائنہ کرایا جائے اور معلوم کیا جائے کہ اس کی آنکھ ضائع ہوئی ہے یا نہیں،اس پر عدالت نے ایم ایس جناح ہسپتال کو حکم دیا کہ وہ متاثرہ لڑکی کو چیک کرکے عدالت میں آج رپورٹ پیش کریں۔ رجسٹراربرن یونٹ ڈاکٹر سیف الرحمن کا بیان قلمبند کرنے کے بعد عدالت نے مزید گواہوں کو طلب کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔اس کیس میں ایک ملزم عصمت اللہ نامزد ہے،جس پر الزام ہے کہ اس نے شادی نہ کرنے پر ڈیفنس اے کے بازار میں بینش پر تیزاب پھینک کر اس کا چہرہ جلا دیا تھا۔

مزید : علاقائی


loading...