مانگا منڈی، سرکاری ہسپتال رورل ہیلتھ سنٹر میں ادویات ناپید ، مریض خوار

مانگا منڈی، سرکاری ہسپتال رورل ہیلتھ سنٹر میں ادویات ناپید ، مریض خوار

  



مانگا منڈی (نمائندہ خصوصی)مانگا منڈی سرکاری ہسپتال رورل ہیلتھ سنٹر میں ادویات نہ ہونے کے برابر ایم ایس اے شہزاد احمد سے رابطہ کیا تو انہوں نے کہا میں ادویات کہاں سے لاؤں ہیڈ آفس میں لکھ کر دیا ہے کہ ادویات نہ ہیں ہسپتال 2بجے کے بعد جنگل کی صورت احتیار کر جاتا ہے ایمرجنسی کی صورت میں ڈاکٹر غائب ہو جاتے ہیں صرف ایک یا دو وارڈبوائے ہی ہوتے ہیں شہریوں اور سماجی لوگوں کا شدید احتجاج ایم ایس اے نے کہا کہ میرا کام ہے ڈیوٹی لگانا ہے اگر ڈاکٹر غائب ہو جاتے ہیں میں کیاکروں ہسپتال میں روزانہ دو بجے تک تقریباً2سو سے زیادہ مریض چیک کرتا ہوں عوامی شکایات کے مطابق لیڈی ڈاکٹر خواتین مریضوں سے بداخلاقی سے پیش آنے کا وطیرہ رکھا ہے۔

ایم این اے ملک محمد افضل کھوکھر نے ہسپتال کی پرانی بلڈنگ کو تونئی بلڈنگ بنا دی اور دو عدد نئے کمرے بھی بنوادئیے جس پر معلوم ہوا کہ کروڑوں روپے کی لاگت آئی مگر ہسپتال میں ادویات نہیں ہے مانگا منڈی کے شہریوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب اور محکمہ صحت کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ ہسپتال میں ادویات مکمل کی جائے اور غیرحاضر ڈاکٹر کے خلاف کاروائی کی جائے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4