سعودی عرب ، کرپشن الزامات میں گرفتار افراد کی تعداد 500سے تجاوز کر گئی ، 1200 کرکریاضاکاؤنٹس منجمد

سعودی عرب ، کرپشن الزامات میں گرفتار افراد کی تعداد 500سے تجاوز کر گئی ، 1200 ...

  



(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی)سعودی عرب میں کرپشن کے الزام میں گرفتار افرادکی تعداد پانچ سو سے تجاوز کرگئی۔ گرفت میں آنے والوں میں شہزادے شاہی خاندان کے افرادسمیت اعلی سرکاری اہلکار شامل ہیں۔دوسری جانب سعودی عرب کے مرکزی بینک نے کرپشن کے الزام میں گرفتار افراد کے 1200 اکاؤنٹس منجمد کردیئے۔سعودی میڈیا رپورٹس کے مطابق ملزمان کی کمپنیوں کو اپنی سرگرمیاں جاری رکھنے کی اجازت ہے۔دوسری جانب سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے ہدایات جاری کی ہیں کہ کرپشن الزام میں گرفتار افراد کیخلاف تحقیقات کا اثر ان کی کمپنیوں پر نہیں پڑنا چاہیے۔اپنے مراسلے میں ان کا کہنا تھا کہ سرمایہ کاروں کا اعتماد بحال رکھنا بہت اہم اور ضروری ہے۔سعودی مرکزی بینک کاکہناہے کہ ملک میں جاری کرپشن کے خلاف مہم کا اثرمعیشت پر نہیں پڑے گا،تمام کمپنیاں اور بینک معمول کے مطابق کام جاری رکھیں۔سعودی مالیاتی اتھارٹی (ساما)نے کہا ہے کہ بدعنوانی کے الزام میں گرفتار افراد کے ذاتی کھاتے منجمد کئے گئے ہیں، ان کی ملکیت میں آنے والی کمپنیوں کے کھاتوں کو منجمد نہیں کیا گیا۔ زیر تفتیش افراد کی کمپنیوں کے کھاتے پہلے کی طرح ہی رہیں گے۔ ساما نے کہاہے کہ تمام بینکوں کو ہدایت کی گئی ہے کہ زیر تفتیش افراد کے صرف ذاتی کھاتے منجمد کئے جائیں۔ اس ہدایت پر عمل کرتے ہوئے ان متعدد کمپنیوں کے کھاتے بحال کردیئے ہیں جن کے مالکان یا شیئر ہولڈر زیر تفتیش ہیں۔ یہ کمپنیاں پہلے کی طرح اپنے اکاؤنٹ میں تصرف کرتی رہیں گی۔

سعوی عرب

واشنگٹن(آن لائن)امریکی دفتر خارجہ کی ترجمان ہیدر نوؤرٹ نے کہا ہے کہ سعودی عرب کی کرپشن کیخلاف تحقیقات شفاف ہیں اور امریکا تحقیقات میں پیش رفت کی حوصلہ افزائی کرے گا۔ ترجمان ہیدر نوؤرٹ نے میڈیا بریفنگ میں کہا کہ سعودی عرب نے امریکا کو شفاف تحقیقات کی یقین دہانی کروائی ہے۔ سعودی عرب کی جانب سے گرفتاریوں اور کرپشن کے خلاف کریک ڈاؤن درست سمت میں جا رہا ہے اور تحقیقات شفاف انداز میں ہو رہی ہیں۔ اس سے قبل صدر ٹرمپ نے سعودی اقدامات کی حمایت کرتے ہوئے کہا تھا کہ گرفتار ہونے والوں میں سے کچھ افراد نے برسوں سے سعودی عرب میں کرپشن کا بازار گرم کر رکھا تھا۔

امریکہ

مزید : صفحہ اول