حکام کی غفلت، سوئی گیس کا بدترین بحران، لکڑیاں جلانے کا زمانہ آگیا

حکام کی غفلت، سوئی گیس کا بدترین بحران، لکڑیاں جلانے کا زمانہ آگیا

  



ملتان (سٹاف رپورٹر ) سوئی گیس کے بدترین بحران نے زندگی اجیرن کر دی ۔سرکاری ونجی اداروں کے ملازمین و کاروباری افراداور طلبا وطالبات صبح ناشتہ کئے بغیر جانے لگے۔ خواتین لکڑیا ں جلانے اور سلنڈر استعمال کرنے پر مجبور ہو گئیں ۔تفصیل کے مطابق سوئی گیس ناردرن کے حکام کی غفلت ‘لاپروائی اور نا اہلی کے باعث صارفین عذاب میں مبتلا ہو گئے ہیں ۔ ممتاز آباد ‘ رسول آباد ‘ مغل آباد‘ مومن آباد‘ رائٹرز کالونی‘ ثمن آباد ‘ شریف پورہ‘ بہادرپور‘ زکریا(بقیہ نمبر17صفحہ12پر )

ٹاؤن ‘ عرفات کالونی ‘لوہار کالونی ‘ یعقوب ٹاؤن ‘ نیو ناظم آباد ‘مدینہ کالونی ‘ کڑی داؤد خان ‘ ناصر آباد ‘ محمودآباد ‘ حیدری کالونی ‘ مکہ کالونی اور دیگر علاقوں میں صبح سویرے ہی گیس غائب ہوجاتی ہے جس کے باعث خواتین کو ناشتہ تیار کرنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔بیشترسرکاری و نجی اداروں کے ملازمین اور طلبا وطالبات کو ناشتہ کئے بغیر ہی جانا پڑتا ہے جبکہ کچھ افراد بازار سے کھانا منگواتے ہیں ۔ خواتین اس عذاب ناک صورتحال سے تنگ آکر گیس سلنڈر اور لکڑیاں استعمال کرنے پر مجبور ہو گئی ہیں جس پر کافی اخراجات آرہے ہیں۔ صارفین نے شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت عوام کے مسائل حل کرنے میں ناکام ہو گئی ہے ۔ ابھی تک بجلی کا بحران حل نہیں ہو سکا ۔اوپر سے سردیاں شروع ہونے پر سوئی گیس کے بحران نے سر اٹھالیا ہے ۔ سوئی گیس ناردرن کے حکام کی نا اہلی کا عذاب صارفین کو بھگتنا پڑ رہا ہے ۔ اگر بل ادا نہ کیا جائے یا تاخیر ہو جائے تو سوئی گیس والے فوری طور پر کنکشن کاٹ دیتے ہیں اور بل بھی پورا لیتے ہیں مگر سوئی گیس فراہم نہیں کی جا رہی ہے ۔ صارفین نے وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ سوئی گیس کے بدترین بحران کا نوٹس لیاجائے۔معاملات ٹھیک کئے جائیں۔ سوئی گیس بلا تعطل فراہم کی جائے اور سوئی گیس ناردرن کے نا اہل افسران کے خلاف کارروائی کی جائے ۔

گیس بحران

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...