سیکاس یونیورسٹی پشاور کی آئی جی ایم ٹیم کا دورہ بوسٹن امریکہ

سیکاس یونیورسٹی پشاور کی آئی جی ایم ٹیم کا دورہ بوسٹن امریکہ

  



پشاور( کرائمز رپورٹر)امریکہ کے شہر بوسٹن میں منعقد ہونے والے کھیلوں کے سینتھیٹک بیالوجی کے عالمی مقابلے، آئی جی ایم (iGEM 2017) میں شرکت کے لئے سیکاس یونیورسٹی پشاو کے مختلف شہروں سے تعلق رکھنے والے گر یجویٹ طلباء کی بارہ رکنی ٹیم امریکہ روانہ ہوگئی۔ یہ پاکستان کی دوسری ٹیم ہے جو آئی جی ایم ( بین الاقوامی جنیاتی مشینی مقابلہ میں شرکت کررہی ہے۔ جس میں دنیا بھر سے تین سو مختلف ٹیمیں حصہ لیں گی۔پچھلے سال کی طرح اس بار بھی ڈاکٹر فیصل، ڈائریکٹر انسٹیوٹیوٹ آف انٹیگریٹو بائیوسائنسز، سیکاس یونیورسٹی کی ریسرچ لیب نے ٹیم کی میزبانی اور ڈائیریکٹریٹ آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی خیبرپختونخواہ کے تعاون سے یہ شرکت ممکن ہوئی۔اس سال آئی جی ایم ٹیم نے رپورٹر مچھلی کی تشکیل پر کام کیا ہے یہ ایک مچھلی ہے جوتازہ پانی میں بھاری دھاتی آلودگی کی جانچ پڑتال کرتی ہے جس کی وجہ سے اسکا رنگ تبدیل ہوجاتا ہے۔ اس عمل کی ادائیگی کے لئے خصوصی جنیاتی، ڈی این اے سرکٹ ڈیزائن کیا ہے اور بیکٹیریاتی خلیوں پر اس کا کامیاب تجربہ بھی کیا ہے۔جس سے مچھلی کی افزائش نسل کرنے والوں اور صارفین کی زندگی، رہن سہن اور صحت پر نمایاں اثر پڑیگا۔ آئی جی ایم پشاورکی ٹیم نے اس سال کمپیوٹر ماہرین کی مدد سے بائیو سینسر کا ڈیجیٹل انٹرفیس متعارف کرایا ہے جسے میکس (MAX) کانام دیا گیا ہے۔Arduino کی بنیاد پرتشکیل شدہ ڈیجیٹل آلہ جوبیکٹریاتی خلیوں کو سینس کرکے مچھلی افزائش کرنے والوں اور صارفین کو موبائل فون پر ٹیکسٹ میسج بھیج سکتا ہے۔ڈاکٹر فیصل کے مطابق یہ ایک ناقابل یقین ایجاد ہے جس کا پچھلے ادوار میں تصور تک ممکن نہ تھا۔اس ٹیم میں دو لڑکیاں اور دس لڑکے شامل ہیں جو مختلف شہروں لاہور، اٹک ،اسلام آباد ، ملتان، فیصل آباد،خیبرایجنسی، نوشہرہ، چارسدہ، پشاور ، صوابی اور مردان سے تعلق رکھتے ہیں۔اس ساری ایجاد اور تحقیق کا بیشتر کریڈٹ ڈائیریکٹیٹ آف سائنس اور ٹیکنالوجی کو جاتا ہے جس نے بیالوجیکل سائنس کی تحقیق و ترقی میں اہم کردار ادا کرتے ہوئے اس سلسلے میں بہت تعاون و مدد فراہم کی ہے۔مصنوعی حیاتیات اس شعبے میں مستقبل میں اہم کردار ادا کرے گی جس سے عالمی اورپاکستان کی معیشت پر مثبت اثرات مرتب ہونگے۔ اس سلسلے میں سیکاس یونیورسٹی ملک میں سنتھیٹک بیالوجی کے فروغ کے لئے اپنا بھرپور کردار ادا کرے گی

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...