شہر قائد میں 19 بچے اغوا ہونے کا انکشاف، پولیس ایف آئی آر درج کرنے سے انکاری

شہر قائد میں 19 بچے اغوا ہونے کا انکشاف، پولیس ایف آئی آر درج کرنے سے انکاری
شہر قائد میں 19 بچے اغوا ہونے کا انکشاف، پولیس ایف آئی آر درج کرنے سے انکاری

  



کراچی ( ڈیلی پاکستان آن لائن)مختلف علاقوں سے 19 بچوں کے اغوا اور گمشدگی کا حیرت انگیز انکشاف ہوا ہے، بچوں کی بازیابی کے لیے سندھ ہائیکورٹ میں درخواست دائر کر دی گئی۔

نجی ٹی وی چینل 92نیوز کے مطابق شہر قائد میں والدین کی طرف سے سندھ ہائی کورٹ میں دی گئی درخواست میں موقف اختیا ر کیاگیا کہ کراچی کے مختلف علاقوں سے 19بچے اغواہوئے ہیں ، بچوں کی عمریں ڈھائی سے چودہ سال کے درمیان ہیں ، بچوں کو گلی میں کھیلتے اور سکول جاتے ہوئے اغوا کیا گیا۔ والدین کا یہ بھی کہنا تھا کہ پولیس کی طرف سے ابھی تک ایف آئی آر درج نہیں کی گئی اور پولیس گمشدہ بچوں کی بازیابی کے لیے والدین کے ساتھ تعاون کرنے سے بھی گریزاں ہے۔ عدالت نے پولیس کی طرف سے اغوا کی ایف آئی آر درج نہ کرنے پر سخت ظہار برہمی کیا۔ ہائی کورٹ  نے پولیس رپورٹ کو محض قصے کہانیاں قرار دیا اور آئی جی سندھ کو حکم دیا کہ وہ اس کیس کی خود نگرانی کرتے ہوئے بچوں کی بازیابی کو یقینی بنائے۔ سندھ ہائی کورٹ نے صوبائی اور وفاقی حکومت کے افسران کو بھی گمشدہ بچوں کی بازیابی کے لیے نوٹس جاری کا دیا ہے۔

مزید : کراچی