سابق امیر طالبان ملا منصور کو پاکستانی پاسپورٹ، شناختی کارڈ جاری نہیں ہوا: احسن اقبال

سابق امیر طالبان ملا منصور کو پاکستانی پاسپورٹ، شناختی کارڈ جاری نہیں ہوا: ...
سابق امیر طالبان ملا منصور کو پاکستانی پاسپورٹ، شناختی کارڈ جاری نہیں ہوا: احسن اقبال

  



اسلام آباد (ویب ڈیسک)وزیر داخلہ احسن اقبال نے طالبان کے سابق امیر ملامنصور کو پاکستانی پاسپورٹ اور قومی شناختی کارڈ جاری ہونے کی خبروں کو غلط قرار دے دیا ہے۔وزیرداخلہ احسن اقبال نے سینیٹ کو تحریری طور پر آگاہ کیا کہ میڈیا میں ملا منصور کے پاس پاکستانی پاسپورٹ اور شناختی کارڈ کی رپورٹس تھیں تاہم تحقیقات کے بعد معلوم ہوا ہے یہ شناختی کارڈ ملا منصور کا نہیں بلکہ ملا منصور والا کارڈ محمد ولی ولد شاہ محمد نامی شخص کو جاری کیا گیا تھا۔

انھوں نے کہا کہ جعلی کارڈ جاری کرنے میں ملوث اہلکاروں کے خلاف محکمانہ انکوائری کی گئی ہے، نادرا کے ملازم فصیح الدین، ڈپٹی اسسٹنٹ ڈائریکٹر، آر ایچ او کراچی کو بڑی سزا کے طور پر ملازمت سے برطرف کیا گیا ہے۔تحریری بیان میں ان کا کہنا تھا کہ مقدمہ درج کیا گیا اور ان کے خلاف عدالتی کارروائی زیر التوا ہے۔پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے رہنما فرحت اللہ بابر نے کہا کہ نچلی سطح کے ملازمین کے خلاف کارروائی مسئلے کا حل نہیں حکومت تحقیقات کرے کہ ان ملازموں کو جعلی شناختی کارڈ جاری کرنے کی ہدایات دینے والے کون تھے۔

سابق چیئرمین نیب کو عبرتناک سزا دینی چاہیے: عمران خان

یاد رہے کہ افغان طالبان کے سابق امیر ملامنصور کو 22 مئی 2016 کو امریکا کی جانب سے پاک-افغان سرحد پر ایک دور دراز علاقے میں فضائی حملے میں ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا گیا تھا۔سینیٹ کو جعلی اور مشکوک شناختی کارڈ سے متعلق بتایا گیا کہ ملک میں مجموعی طور پر65 ہزار تین جعلی شناختی کارڈ پائے گئے، سب سےزیادہ جعلی شاختی کارڈز پنجاب میں جاری ہوئے جہاں 20 ہزار 865 جعلی شناختی کارڈ پائے گئے۔

مزید : اسلام آباد