’اب یہ کام نہ کرنا ورنہ۔۔۔‘ ایران نے سعودی عرب کو اب تک کی خوفناک ترین دھمکی دے دی، پورے عالم اسلام کے لئے انتہائی سنگین خطرہ

’اب یہ کام نہ کرنا ورنہ۔۔۔‘ ایران نے سعودی عرب کو اب تک کی خوفناک ترین دھمکی ...
’اب یہ کام نہ کرنا ورنہ۔۔۔‘ ایران نے سعودی عرب کو اب تک کی خوفناک ترین دھمکی دے دی، پورے عالم اسلام کے لئے انتہائی سنگین خطرہ

  



تہران(مانیٹرنگ ڈیسک) ایران اور سعودی عرب کے تعلقات کبھی خوشگوار نہیں رہے لیکن حالیہ عرصے میں ان کی تلخی عروج کو پہنچ چکی ہے۔ اب ایران نے سعودی عرب کو ایسی خوفناک ترین دھمکی دے دی ہے کہ پورے عالم اسلام کے لیے سنگین خطرہ پیدا ہو گیا ہے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ایران کا موقف ہے کہ سعودی عرب اسے مسلسل جنگ کی دھمکیاں دیتا آ رہا ہے، جس پر آج ایرانی صدر حسن روحانی نے سعودی عرب کو جوابی دھمکی دیتے ہوئے کہا ہے کہ ”آئندہ کبھی ایران کو جنگ کی دھمکی مت دینا ورنہ تمہیں ہماری طاقت کا سامنا کرنا پڑے گا اور پھر تمہارے ہاتھ کچھ نہیں آئے گا۔“

دنیا کے تمام ممالک ایک طرف اور امریکہ ایک طرف، وہ کام ہوگیا جس کا امریکیوں نے کبھی خوابوں میں بھی نہ سوچا تھا

حسن روحانی نے اپنی دھمکی میں امریکہ اور اس کے اتحادیوں کی ایران کو دبانے کی کوششوں کا حوالہ دیتے اور سعودی عرب کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ”ڈونلڈٹرمپ نے ہمارے خلاف اپنے تمام اتحادیوں کو متحرک کیا لیکن وہ کچھ حاصل نہیں کر سکے، تم کیا کر لو گے؟ تم اسلامی جمہوریہ ایران کی طاقت کو جانتے ہو۔ تم سے کہیں زیادہ طاقتور ممالک ایرانی قوم کے خلاف کچھ نہیں کر سکے۔“واضح رہے کہ سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے گزشتہ دنوں ایران پر الزام عائد کیا تھا کہ وہ سعودی عرب کے خلاف استعمال کرنے کے لیے یمنی باغیوں کو میزائل فراہم کر رہا ہے جو کہ براہ راست فوجی حملے کے مترادف ہے۔ محمد بن سلمان کے اس الزام کے جواب میں ایرانی صدر کی طرف سے مذکورہ دھمکی دی گئی ہے۔

صدر روحانی کا مزید کہنا تھا کہ ”ہم یمنی باغیوں اور سعودی عرب کے مابین اور خطے کے دیگر علاقوں میں جاری جنگوں کا پرامن تصفیہ چاہتے ہیں۔ہم یمن، عراق اور شام کی فلاح اور ترقی چاہتے ہیں اور سعودی عرب کی بھی۔ اس مقصد کے حصول کے لیے دوستی، بھائی چارے اور باہمی تعاون کے سوا اور کوئی راستہ نہیں۔ اگر سعودی عرب سمجھتا ہے کہ ایران اس کا دوست نہیں ہے اور اس کی بجائے امریکہ اور یہودی ریاست (اسرائیل)کو اپنا دوست سمجھتا ہے تو وہ بہت بڑی سٹریٹجک اور اینالیٹیکل غلطی کر رہا ہے۔“

مزید : بین الاقوامی


loading...