پروڈیوسرسرور بھٹی اور عمارہ حکمت کے درمیان قانونی جنگ ایک بارپھر تیز

پروڈیوسرسرور بھٹی اور عمارہ حکمت کے درمیان قانونی جنگ ایک بارپھر تیز

لاہور(فلم رپورٹر)ماضی کی سپرہٹ فلم ’’’مولاجٹ ‘ ‘‘کے پروڈیوسر سرور بھٹی اور بلال لاشاری کی فلم کی پروڈیوسر عمارہ حکمت کے درمیان قانونی جنگ ایک بار پھر تیز ہوگئی ہے جس کے بعدبلال لاشاری کی ان ٹائٹل فلم ایک بار پھرخبروں کا حصہ بن گئی ہے۔یہ فلم لالی ووڈ کی ریکارڈ سازفلم ’’مولاجٹ‘‘کا جدید ورژن ہے جس کے لئے فلم کے پروڈیوسرسرور بھٹی سے اجازت نہیں لی گئی۔ سرور بھٹی کا دعویٰ ہے کہ2024ء تک فلم کے حقوق اورسنسرسرٹیفیکیٹ ان کے پاس ہیں جس کی وجہ سے کوئی اس فلم کو نہ تو ریلیز کرسکتا ہے اور نہ ہی اس کے کرداراور کہانی کی نقل کرسکتا ہے۔اس سلسلے میں پہلے انہیں حکم امتناعی بھی ملا جو کچھ عرصے بعد خارج ہوگیا۔

یہ امر قابل ذکر ہے کہ دونوں فلموں کی کہانی ناصرادیب نے لکھی ہے جن کا کہنا ہے کہ مجھے ابھی تک اس بات کی سمجھ نہیں آئی کہ آخرسرور بھٹی کیا چاہتے ہیں جبکہ سرور بھٹی کا کہنا ہے کہ اگر فلم بنانے سے پہلے مجھ سے رابطہ کیا جاتا تو ہوسکتا ہے کہ بات یہاں تک نہ پہنچتی اورمیں اجازت دے دیتا لیکن اب میں پیچھے نہیں ہٹوں گا۔

دوسری طرف عمارہ حکمت نے تمام خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ فلم پر کسی طرح کا کوئی سٹے آرڈر نہیں ہے۔بلال لاشاری کی فلم میں فوادخان مولاجٹ اورحمزہ علی عباسی نوری نت کے کردار کررہے ہیں جن کے ساتھ عمائمہ ملک اور ماہرہ خان سمیت بہت سے فنکار کاسٹ میں شامل ہیں۔

مزید : کلچر