ہر سال تپ دق کے 5لاکھ مریضوں کا اضافہ باعث تشویش ہے، یاسمین راشد

ہر سال تپ دق کے 5لاکھ مریضوں کا اضافہ باعث تشویش ہے، یاسمین راشد

لاہور( جنرل رپورٹر)وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد نے اس بات پر تشویش کا اظہار کیا ہے کہ پاکستان میں ہر سال تپ دق (ٹی بی) کے 5لاکھ نئے کیس سامنے آرہے ہیں۔ جمعرات کو مری میں تپ دق کے علاج کے مرکز ساملی سینی ٹوریم کے دور میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے عالمی ادارہ صحت کی حالیہ رپورٹ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ادویات کے خلاف مزاحمت کے مریضوں کی تعداد کے حوالے سے پاکستان دنیا کا چوتھا بڑا ملک ہے ۔ ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا کہ ڈاٹس ٹی بی کے علاج کا مفید پروگرام اور مریضوں کے لئے امید کی روشنی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پنجاب میں محکمہ صحت کے زیراہتمام ٹی بی کا الگ پروگرام کام کرررہا ہے۔ تپ دق پر کنٹرول کے لئے حکومت ہر ممکنہ وسائل استعمال کرے گی۔ وزیر صحت نے سید محمد حسین گورنمنٹ ٹی بی سینی ٹوریم کے تمام شعبوں کا معائنہ اور طبی سہولیات کی فراہمی پر اظہار اطمینان کیا۔ انہوں نے کہا کہ ساملی سینی ٹوریم ٹی بی کا مثالی شفاعی مرکز ہے۔ حکومت یہاں مزید سہولیات کی فراہمی کے لئے خصوصی پیکیج پر غور کرے گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1