ڈیبٹ کارڈ ہیکنگ کی شکایات میں کئی گنا اضافہ ہوا،ایف آئی اے

ڈیبٹ کارڈ ہیکنگ کی شکایات میں کئی گنا اضافہ ہوا،ایف آئی اے

کراچی(اسٹاف رپورٹر)فیڈرل انوسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے) کے ڈائریکٹرسائبر کرائم ونگ کیپٹن(ر)محمد شعیب نے کہا ہے کہ ایف آئی اے کے پاس ڈیبٹ کارڈ ہیکنگ کی شکایات میں کئی گنا اضافہ ہوا ہے۔خصوصی گفتگو کرتے ہوئے ڈائریکٹر سائبر کرائم ونگ ایف آئی اے نے بتایاکہ ایجنسی کو ڈیڑھ ہزار سے زائد شکایت موصول ہوچکی ہیں۔ یہ شکایات پورے پاکستان سے موصول ہوئی ہیں۔شکایت کنندگان کہتے ہیں کہ بینکس ان کی داد رسی نہیں کررہے۔ شکایت کرنے والے داد رسی نہ ہونے پر ایف آئی اے سے رابطہ کررہے ہیں۔محمد شعیب نے کہا کہ جمعرات کو اسٹیٹ بینک سے اس بارے میں میٹنگ ہورہی ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ بینکس کے خلاف کارروائی کا معاملہ بھی میٹنگ میں زیر غور آئے گا۔انہوں نے بتایا کہ ایف آئی اے مبینہ طور پر بینکوں سے ڈیٹا چوری کے معاملہ کی تحقیقات کا آغاز کردیا ہے۔ ایک رپورٹ کے مطابق اب تک تقریبا 26 لاکھ ڈالرز چرائے جا چکے ہیں جبکہ صرف دس دنوں میں نو بینکوں کا ڈیٹا چوری کیا گیا۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اب تک 8864 ڈیبٹ کارڈز چوری ہوچکے ہیں۔ ڈائریکٹر ایف آئی اے سائبر کرائم کیپٹن(ر)محمد شعیب نے کہا کہ ایف آئی اے کو بینکوں کی سیکیورٹی کے حوالے سے مختلف شکایات موصول ہوئیں تھیں۔انہوں نے کہاکہ ہر کیس مختلف ہوتا ہے لیکن بہت سے بینکوں نے اپنا ڈیٹا لیک ہونے کی شکایت کیں۔ہیکنگ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے انہوں نے بتایا تھا کہ ملک میں ہونے والے حالیہ ہیکنگ کے واقعات ایک دوسرے سے مختلف ہیں کیونکہ ہیکنگ کا کوئی ایک طریقہ نہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ہزاروں بینکوں کی سیکیورٹی کے حوالے سے مسائل سامنے آئے ہیں۔ صارفین کو ہدایت دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عوام کسی قسم کی فون کال پر اپنے بینک اکانٹس کی تفصیلات فراہم نہ کریں۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر