بیش بہاء قربانیوں کے بعدامن وامان قائم ہو ا، کمانڈنٹ مہمندرائفلز

بیش بہاء قربانیوں کے بعدامن وامان قائم ہو ا، کمانڈنٹ مہمندرائفلز

  



مہمند (نمائندہ پاکستان) ضلع مہمند میں مقامی مشران اور سیکورٹی فورسز کے قربانیوں کی بدولت امن بحال ہو چکا ہے۔ علاقے کی ترقی اور خوشحالی کو برقرار رکھنے کیلئے اب مزید تعاؤن کی ضرورت ہے۔ دہشت گردی کی روک تھام کیلئے مشران نشاندہی کر کے فورسز کے آنگھ اور کان بن جائے۔ مختلف نعروں پر پختون قوم کے نوجوانوں کو گمراہ کیا جا رہا ہے۔ یہاں کے مقامی لوگوں کو روزگار دینے کیلئے پاک افغان تجارتی شاہراہ کھولنے اور کاشتکاروں کو یوریاں کھاد لانے کی اجازت کیلئے جلد اقدامات اُٹھائینگے۔ ان خیالات کا اظہار کمانڈنٹ مہمند رائفلز کرنل محمد جمیل خان نے مختلف اقوام کے سرکردہ مشران کے جرگے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی جنگ کے بعد امن بحال رکھنے اور علاقے کی ترقی اور خوشحالی کا سفر جاری رکھنے کیلئے ہم باہمی مشاورت سے مزید آگے بڑھائینگے۔ بعض علاقوں میں ایک بار پھر دھشت گردی کے واقعات رو نما ہو سکتے ہیں۔ جس کیلئے مشران ہمارے ساتھ ہو کر نشاندہی کریں۔ انہوں نے کہا کہ بہت جلد کاشتکاروں کو یوریاں کھاد کی اجازت اور پاک افغان سرحد گورسل کو تجارت کی غرض سے کھولنے کیلئے اعلیٰ حکام کو آگاہ کرینگے۔ انشاء اللہ مارچ سے پہلے پہلے کیڈٹ کالج کو کھولینگے اور مہمند ماڈل سکول کیلئے 36 تک ٹیچرز بھرتی کرینگے۔ انہوں نے مشران پر زور دیا کہ ابھی بھی بعض لوگ مختلف نعروں کے ذریعے پختون قوم کے نوجوانوں کو گمراہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں لہٰذا اپنے جوانوں پر کھڑی نظر رکھیں۔ مقامی مشران نے کمانڈنٹ مہمند رائفلز کو اپنے تمام تر تحفظات سے آگاہ کیا کہ ہم نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں بے مثال قربانیاں دیئے ہیں مگر باؤجود بھی انضمام کے وقت ہمیں اعتماد میں نہیں لیئے گئے۔ اور اب ذمہ داری ڈی پی او کو دی گئی ہے جبکہ ہمارے جرگوں کو بھی غلط رنگ دیکر ہمیں تنگ کیا جاتا ہے۔ اور ہماری قربانیوں کو غلط رنگ دیا جاتا ہے۔ کمانڈنٹ مہمند رائفلز کرنل محمد جمیل نے ان کے تحفظات کو دور کرنے اور عوامی مشکلات کے حل کیلئے جلد کھلی کچہری بلانے کی ہدایت کی۔ کہ اب عوامی مشکلات حل کرنے کیلئے مشترکہ کوششیں جاری رکھیں گے۔ مشران نے کمانڈنٹ مہمند رائفلز کو ہر قسم تعاؤن دلانے کا اعلان کیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...