وزیراعظم عمران خان آج کرتار پور راہداری کا افتتاح کرینگے، تیاریاں مکمل 

      وزیراعظم عمران خان آج کرتار پور راہداری کا افتتاح کرینگے، تیاریاں مکمل 

  



لاہور(فلم رپورٹر،این این آئی)وزیراعظم پاکستان عمران خان آج کرتار پور راہداری کا افتتاح کریں گے جس کیلئے تمام تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں۔بھارت کی جانب سے سابق وزیراعظم من موہن سنگھ اور سیاسی و سماجی رہنما نوجوت سنگھ سدھو کی شمولیت بھی متوقع ہے، افتتاحی تقریب کے دعوت نامے سفارتکاروں اور دیگر اہم شخصیات کو بھیجوائے گئے ہیں۔معززین کیلئے 60 فٹ لمبا اور چوبیس فٹ چوڑا اسٹیج تیار کیا گیا جبکہ شرکا کے لیے پنڈال میں چھ ہزار کرسیاں، ساونڈ سسٹم اور اسکرینیں لگائی گئی ہیں۔ بارش کے پیش نظر پنڈال کو واٹر پروف بنایا گیا۔بابا گرونانک کے550 ویں جنم دن میں شرکت کیلیے مختلف ممالک میں پاکستانی سفارتخانوں نے سکھ یاتریوں کو ویزے بھی جاری کر دیئے ہیں۔ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق مختلف ممالک سے پانچ ہزار سکھ یاتریوں کو ویزے جارے کیے گئے۔چیئرمین متروکہ وقف املاک بورڈ ڈاکٹر عامر احمد نے بتایا کہ کرتار پور راہداری کی افتتاحی تقریب کے تمام تر انتظامات مکمل ہیں،کرتار پور راہداری ایک اہم سنگ میل ہے جس سے پوری دنیا میں پاکستان کی نیک نامی اور عزت و قار میں اضافہ ہوا ہے  بھارت سمیت دنیا بھر سے آنے والے ہزاروں سکھ یاتری یہاں پہنچ چکے ہیں اور انہیں مکمل سہولیات دی جا رہی ہیں موسم کو مد نظر رکھتے ہوئے ان کی رہائش اور آرام کے لیے خصوصی انتظامات کیے گئے ہیں۔چیئرمین بورڈنے مزید بتایا کہ سکھوں کے ساتھ ساتھ ہندوؤں کی عبادت گاہوں کی تزئین آرائش اور تعمیراتی کام کر کے ان کی اصل خوبصورتی کو بھی بحال کیا گیا ہے۔پاکستان سکھ گورو دوارہ پر بندھک کمیٹی کے پردھان سردار ستونت سنگھ کا کہنا ہے کہ ٹرسٹ بورڈ کے سیکرٹری طارق وزیر، ڈپٹی سیکرٹری شرائنز عمران گوندل، بورڈ ترجمان عامر حسین ہاشمی سمیت اہم سکھ رہنماء اور وفاقی و صوبائی حکومت بورڈ افسران و سکیورٹی کا عملہ دن رات یاتریوں کی خدمت میں مصروف عمل ہے۔

راہداری/افتتاح

اسلام آباد(آن لائن)کرتارپور راہداری پر بھارت کے انکار کے بعد پاسپورٹ اور رجسٹریشن کی شرط بحال کر دی گئی، بھارت کے اعتراض کے بعد خصوصی رعایت کو جاری نہیں رکھا جا سکتا۔سفارتی ذرائع کے مطابق ممکن نہیں کہ بھارت پاسپورٹ چیک کرے اور پاکستان نہ کرے، پاکستان نے ایک سال کیلئے پاسپورٹ اور 10 روز قبل رجسٹریشن کی شرط ختم کی تھی، دونوں ممالک کی جانب سے یاتریوں کی فہرستوں کے تبادلے پر کام شروع ہوگیا۔ادھر ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے  میڈیا سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا یاتری 3 انٹری پوائنٹس سے پاکستان میں داخل ہونگے، یاتری راہداری، واہگہ بارڈر اور دیگر ممالک سے پاکستان پہنچیں گے، تقریب میں منموہن سنگھ، نوجوت سدھو، بھارتی پنجاب کے وزیراعلیٰ شرکت کرینگے۔ ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر کیے گئے ٹوئٹ میں کہا کہ 'پاکستان نے بابا گرونانک کے 550ویں جنم دن پر سکھ یاتریوں کو سہولیات فراہم کرنے کیلیے خصوصی مراعات کا اعلان کیا تھا جسے بھارت نے سکھ یاتریوں کے جذبات کو نظر انداز کرتے ہوئے مسترد کردیا۔انہوں نے کہا کہ ' اگر بھارت یاتریوں کے لیے ان اقدامات سے استفادہ حاصل کرنے کی خواہش نہیں رکھتا تو یہ بھارت کی مرضی ہے۔

پاسپورٹ/شرط بحال

اسلام آباد(آن لائن) وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ بھارت نے مقبوضہ کشمیرمیں ظلم اوربربریت کا بازارگرم کررکھا ہے، ہم نے کرتارپورراہداری کے افتتاح سے خیرسگالی کا پیغام دیا،نئی دہلی میں موجود کچھ قوتیں اس خیر سگالی کو پسند نہیں کرتیں۔جمعہ کو ایک بیان میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان نے کرتارپورراہداری کے افتتاح سے خیرسگالی کا پیغام دیا ہے، من موہن سنگھ کوافتتاح کی تقریب میں شمولیت کی دعوت دی، پانچ ہزارسکھ روزانہ کرتاپورآسکیں گے۔ پاسپورٹ کی بندش عارضی طور پر ختم کر دی گئی ہے، 9 اور 11 نومبر کو فیس بھی چھوٹ دی گئی ہے۔وزیرخارجہ نے کہا کہ کچھ لوگ بغیرسوچے سمجھے تنقید کرتے ہیں، بھارت میں کچھ قوتیں نہیں چاہتیں کہ خیرسگالی کا بیج پروان چڑھے۔ آج مقبوضہ کشمیرمیں مسلمانوں کوجمعہ کی نمازکی اجازت نہیں دی جارہی، بھارت نے مقبوضہ کشمیرمیں ظلم اور بربریت کا بازار گرم کررکھا ہے۔

وزیر خارجہ

مزید : صفحہ اول


loading...