چودھری شوگر ملز کیس ، نواز شریف ،مریم کو آئندہ پیش ہونے کا حکم ، یوسف عباس کے ریمانڈ میں مزید توسیع

  چودھری شوگر ملز کیس ، نواز شریف ،مریم کو آئندہ پیش ہونے کا حکم ، یوسف عباس ...

  



لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت کے جج امیر محمد خان نے چودھری شوگر ملز منی لانڈرنگ کیس میں سابق وزیراعظم میاں نوازشریف کی صاحبزادی مریم نواز شریف اوران کے کزن یوسف عباس کے مقدمہ کی سماعت 22نومبر تک ملتوی کردی ،عدالت نے وکلاءکی جانب سے میاں نواز شریف کی حاضری معافی کی درخواست منظورکرتے ہوئے آئندہ سماعت پر مریم نواز سمیت میاںنواز شریف کو بھی پیش ہونے کا حکم دیاہے،عدالت نے آئندہ سماعت پر میاں نواز شریف کو ریفرنس دائرہونے تک وکلاءکی جانب سے انہیں استثنیٰ دینے کی درخواست پر وکلاءکو بحث کے لئے بھی طلب کرلیاہے۔کیس کی سماعت شروع ہوئی تومریم نواز اپنے شوہرکیپٹن (ر)محمدصفدر کے ہمراہ عدالت پیش ہوئیں، شریک ملزم مریم نواز کے کزن یوسف عباس کوبھی جیل سے لاکرسخت سیکیورٹی میں عدالت کے روبرپیش کیا گیا،مریم نواز شریف نے عدالت کوبتایا کہ میاں نوازشریف کو چھوڑ کر آنا بہت مشکل تھا مگر عدالتی حکم پر آئی ہوں، عدالت نے مریم نواز کے ضمانتی مچلکوں پردستخط کرواتے ہوئے کہا کہ یہ دستخط کا مطلب ہے کہ آپ ہرتاریخ سماعت پر حاضر ہوں گی، جس پر مریم نواز نے فاضل جج سے مخاطب ہوکرکہا کہ آپ نے بلایا ہو اور پیش نہ ہوئے ہوں،آج بھی میاں نوازشریف کی طبیعت خراب تھی مگر ان کو چھوڑ کرآئی ہوں،میاں نوازشریف کے وکیل امجدپرویزملک نے حاضری معافی کی درخواست دی تونیب کے پراسیکیوٹرحافظ اسداللہ نے میاں نواز شریف کی حاضری استثنیٰ کی درخواست کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ درخواست کے ساتھ میڈیکل سرٹیفکیٹ نہیں لگایاگیا،حاضری معافی کی درخواست کے ساتھ صرف لاہور ہائی کورٹ کا ضمانت پر رہائی کاحکم لگایاگیاہے ،میاںنواز شریف گھر پر ہیں ،ہسپتال میں نہیں،ضمانت کے بعد بھی ملزم کو ہر صورت عدالت میں پیش ہونا چاہیے، ماجھے ساجھے اور میاںنواز شریف کے کیس کو ایک جیسا چلنا چاہیے، جس پر نواز شریف کے وکیل امجد پرویز ملک نے کہا کہ اگر عدالت حکم دے گی تو نواز شریف کا میڈیکل سرٹیفکیٹ پیش کردیں گے ،نواز شریف کے وکیل نے کہا کہ عبدالعلیم خان کیس میں بھی ان کی حاضری معاف کی گئی تھی ،اگرقانون کی منشا ہے کہ نواز شریف پیش ہوں تو ہم حاضر ہیں،ضمانت کے بعد کوئی ریفرنس زیرالتواءنہیں کہ نواز شریف کا پیش ہونا ضروری ہے ،عدالت سے استدعاہے ریفرنس دائر ہونے تک میاں نوازشریف کی حاضری معافی کی درخواست منظور کی جائے،نوازشریف کے وکیل نے مزید کہاکہ پراسیکیوشن نے یہ تو بتایا نہیں کہ ریفرنس کب دائر کر رہے ہیں،جب تک ریفرنس نہ آئے اس وقت تک ملزم کو حاضری سے استثنی دیا جا سکتا ہے،اس وقت چودھری شوگر ملز کی انکوائری ہو رہی ہے ٹرائل شروع نہیں ہوا،ضمانت کے بعد نیب کیسز میں ریفرنس آنے تک ملزم کو استثنیٰ دیا جاتا ہے،فاضل جج دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ ان کی عدالت میں سب کے ساتھ ایک جیسا سلوک ہو گا،عدالت نے وکلاءکے دلائل سننے کے بعد میاںنوازشریف کی حاضری معافی کی استدعا منظور کرتے ہوئے کیس کی مزید سماعت آئندہ پیشی تک ملتوی کرتے ہوئے مریم نواز کے کزن شریک ملزم یوسف عباس کے جوڈیشل ریمانڈ میں توسیع کردی۔

مزید : صفحہ اول


loading...