ہم چاہیں یا نہ چاہیں بھارت کے ساتھ جنگ ہو گی ، ہمیں تیار رہنا چاہیے : صدر ، وزیراعظم آزادجموں کشمیر 

    ہم چاہیں یا نہ چاہیں بھارت کے ساتھ جنگ ہو گی ، ہمیں تیار رہنا چاہیے : صدر ، ...

  



کراچی (این این آئی)صدر آزاد جموں و کشمیر سردار مسعود خان نے کہا ہے کہ ہم چاہیں یا نہ چاہیں مگر بھارت کے ساتھ جنگ ہوگی اور ہمیں ذہنی طور پر اس کے لیے تیار رہنا چاہیے ۔پاک بھارت جنگ کی صورت میں لاکھوں افراد کی جانوں کا ضیاع ہوسکتا ہے ۔اقوام متحدہ سمیت دیگر اداروں کو اس مسئلے کو سنجیدگی سے لینا ہوگا ۔اس حساس ایشو پر سکیورٹی کونسل کی خاموشی افسوسناک ہے ۔ مقبوضہ کشمیر میں 96 دن کے دوران کشمیریوں پر ظلم و جبر کی انتہا کردی گئی ہے ۔لوگ اپنے گھروں تک محصور ہو کر رہ گئے جبکہ کئی گھر بار چھوڑ چکے ہے۔ہمیںپیچھے کی طرف نہیں جانا ہے ۔ہم مودی سرکار کا اصل چہرہ پوری دنیا کو کھائیں گے ۔ان خیالات کا اظہار انہوںنے جمعہ کو مقامی ہوٹل میں سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔انہوںنے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی جانب سے ظلم و جبر کی انتہاءکردی گئی ہے ۔مقبوضہ وادی میں ماں باپ اپنے پیاروں کے دیدار کو ترس رہے ہیں۔رات گئے لوگوں کے گھروں پر چھاپے مارے جارہے اور ان کی املاک کو نقصان پہنچایا جارہا ہے۔خواتین کے تقدس کو پامال کیا جارہا ہے لیکن اس کے باوجود وہاں ہر شخص کی زبان پر صرف آزادی کے نعرے ہیں ۔انہوںنے کہا کہ بھارت بین الاقوامی قوانین کی دھجیاں اڑا رہا ہے ۔اس نے بدترین تشدد کی مثال قائم کردی ہے ۔صدر آزاد کشمیر نے کہا کہ آرٹیکل 35-A کشمیریوں کے حق کی نمائندگی کرتا ہے۔بھارت نے مقبوضہ کشمیر کے نقشہ کو خود سے تبدیل کیا ہے جوکہ اقوام متحدہ کے قانون کے خلاف ورزی کی ہے۔انہوںنے کہا کہ بھارت پاکستان کو جنگ کی طرف لے جاناچاہتا ہے اور وہ پاکستان پر حملہ کرنے کی سوچ رہا ہے ۔ ہم چاہیں یا نہ چاہیں مگر بھارت کے ساتھ جنگ ہوگی اور ہمیں ذہنی طور پر اس کے لیے تیار رہنا چاہیے ۔پاک بھارت جنگ کی صورت میں لاکھوں افراد کی جانوں کا ضیاع ہوسکتا ہے ۔سردار مسعود خان نے کہا کہ ہندوتوا کا مقصد ضرف ہندوو¿ں کی حقوق کی نمائندگی کرنا ہے۔یہ نظریہ دیگر مذاہب کے حقوق کو تسلیم نہیں کرتا ہے ۔ہندوتوا کے لیڈروں کامقصد کشمیریوں، پاکستان اور مسلمانوں کو ٹارگٹ کرنا ہے۔بین الااقوامی پارلیمنٹ بھی بھارت کے جبر و تشدد کے خلاف باتیں ہورہی ہیں ۔´مہاتیر محمد کے شکر گزار ہیں کہ انہوںنے کشمیر کے حق کے لئے آواز اٹھائی ہے ۔

سردار مسعود

برسلز(این این آئی)آزاد جموںوکشمیر کے وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر خان نے شہدائے جموںکو شاندار خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیر کی تاریخ قربانیوں سے بھری پڑی ہے اور کشمیر ی اس وقت بھی غیر قانونی بھارتی قبضے کے خلاف لازول قربانیاں دے رہے ہیں۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق راجہ فاروق حیدر خان نے کشمیر کونسل یورپی یونین کے زیر اہتمام ”شہدائے جموںاور مقبوضہ کشمیر کی موجودہ صورتحال“کے عنوان سے برسلز میں ایک سیمینار سے خطاب میں کہا کہ نومبر 1947میں جموں کے غیور مسلمانوں نے اپنی قیمتی جانیںلٹا کر تحریک آزادی کی شمع روشن کی ۔ انہوںنے کہا کہ لاکھوں کشمیری شہداءکی قربانیاں ایک روز ضرور رنگ لائیں گی اور کشمیر بھارت کے غیر قانونی اور جابرانہ قبضے سے آزاد ہو گا۔ انہوںنے کشمیر کاز کو اجاگر کرنے اور نہتے کشمیریوں پر بھارتی مظالم کو بے نقاب کرنے کے حوالے سے کشمیر کونسل یورپی یونین کی کوششوںکو سراہا ۔ کشمیرکونسل ای یو کے چیئرمین علی رضا سید نے کہاکہ تحریک آزادی کو لاکھوں شہداءنے اپنے مقدس لہو سے سینچا ہے اور کشمیری عوام اپنے عظیم شہداءکے مشن کو اسکے منطقی انجام تک پہنچا کر دم لیں گے۔گلوبل کشمیرکونسل کی رکن اور کشمیری نڑاد کینیڈین دانشور ثریاصدیقی نے کہاکہ تحریک آزادی کشمیر میں جموں کے شہدا کا کردار بہت اہم ہے۔دریں اثناء وزیر اعظم آزاد حکومت ریاست جموں و کشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے یورپی یونین کی پارلیمنٹ برسلز میں لکسمبرگ سے تعلق رکھنے والے ممبر یورپین پارلیمنٹ اسابیل ویزلرلما (Isabel WISELER-LIMA Mrs.)اور آسٹریاسے ممبر یورپین پارلیمنٹ لوکس مانڈی(MR.Lukas Mandl) سے بھی الگ الگ ملاقاتیں کیں۔ وزیر اعظم نے پارلیمنٹ کے ممبران کو مقبوضہ جموں وکشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے بارے میں تفصیل سے آگاہ کیا۔وزیر اعظم نے کہا کہ گذشتہ 100 دن سے مقبوضہ جموں کشمیر ہندوستانی فورسز کے محاصرے میں ہے۔ ہندوستانی حکومت مقبوضہ ریاست جموں وکشمیرمیں آبادی کا تناسب تبدیل کرنے کے لئے مقبوضہ ریاست میں نسل کشی کا منصوبہ بنا رہی ہے جو انسانی حقوق سے متعلق بین القوامی قوانین کی صرےحا ًخلاف ورزی ہے۔ وزیر اعظم نے ممبران پارلیمنٹ کو بتایا کہ ہندوستانی ریاستی دہشت گردی مقبوضہ جموں کشمیر تک ہی محدود نہیں ہے بلکہ ہندوستان نے اسے سیز فائر لائن علاقوں تک بڑھا دیا ہے اور آئے روز آزاد جموں وکشمیر کی سول آبادی کو اپنی جارحیت کا نشانہ بنا رہا ہے ، سیز فائر لائن پر روزانہ کی بنیاد پر بلا اشتعال فائرنگ ہندوستانی فورسز کا معمول بن چکا ہے۔

راجہ فاروق حیدر

مزید : صفحہ آخر


loading...