گرینڈ لائنس کی ہڑتال ختم، سرکاری ہسپتالوں میں مریضوں کاغیرمعمولی رش

گرینڈ لائنس کی ہڑتال ختم، سرکاری ہسپتالوں میں مریضوں کاغیرمعمولی رش

  



ملتان (وقائع نگار)گرینڈ ہیلتھ الائنس کی جانب سے ہڑتال ختم کئے جانے پر ٹیچنگ ہسپتالوں کے شعبہ آوٹ ڈور 29 روز بعد گذشتہ روزکھل گئے۔نشتر ہسپتال، چلڈرن کمپلیکس،نشتر انسٹی ٹیوٹ آف ڈینٹسٹری سمیت دیگر سرکاری ہسپتالوں کے شعبہ آوٹ ڈور میں مریضوں کا غیر معمولی رش رہا۔ذرائع کے مطابق مختلف سرکاری ہسپتالوں کے شعبہ آوٹ ڈور میں 11 ہزار سے زائد مریضوں نے علاج کے لئے رجوع کیا۔گرینڈ ہیلتھ الائنس نے سرکاری ہسپتالوں کی ممکنہ نجکاری اور میڈیکل ٹیچنگ انسٹی ٹیوشن(ایم ٹی (بقیہ نمبر37صفحہ12پر)

آئی)آرڈیننس کیخلاف 10 اکتوبر سے شعبہ آوٹ ڈور اور آپریشن تھیٹرز میں ہڑتال کررکھی تھی اور چند روز سے ایمرجنسی،آئی سی یو،سی سی یو کے علاوہ ان ڈور وارڈ میں بھی ہڑتال جاری تھی۔ہڑتال ختم ہونے پر سرکاری ہسپتالوں کے شعبہ آوٹ ڈور کے ذریعے مریضوں کے داخلے بھی شروع کر دیے گئے اور آپریشن تھیٹرز میں معمول کے مطابق آپریشن کئے گئے۔ڈاکٹروں،نرسوں،پیرا میڈیکل سٹاف کی ہڑتال ختم ہونے سے مریضوں نے بھی سکھ کا سانس لیا۔دریں اثنائنشتر گرینڈ الائنس ہیلتھ کا اجلاس گزشتہ روز نشتر ہسپتال کنٹین پر میٹنگ پر منعقد ہوئی ہے۔جس میں ہائی کورٹ لاہور کے فیصلے پر اطمینان ظاہر کیا گیا۔ اور جی ایچ اے پنجاب کے سٹرائیک ختم کرنے کے فیصلے کا خیر مقدم کیا گیا۔گرینڈ الائنس کے عہدیداروں نے کہا ہے کہ ہم اپنی ہیلتھ کمیونٹی، ڈاکٹرز، پیرا میڈیکس، نرسز، ایپکا اور ڈی ایچ اے کی استقامت اور بہادری کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔ اور اپنے حقوق کی اس جنگ میں کسی بھی قسم کی قربانی دینے سے پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ہم ہائی کورٹ لاہور کے جسٹس جواد کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔ جو ہماری آواز بنے۔ اور ہم آگے بھی امید کرتے ہیں۔ کہ ہماری عدلیہ انسانی حقوق ایکٹ کے تحت غریب مریضوں اور ہیلتھ کمیونٹی کے حقوق کی پاسداری کرے گی۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...