اگر آپ کی جمائی کا دورانیہ زیادہ ہے تو آپ انتہائی عقلمند انسان ہیں کیونکہ۔۔۔ سائنسدانوں نے تحقیق میں ایسی چیز ڈھونڈ نکالی کہ آپ بھی حیران رہ جائیں گے

اگر آپ کی جمائی کا دورانیہ زیادہ ہے تو آپ انتہائی عقلمند انسان ہیں کیونکہ۔۔۔ ...
اگر آپ کی جمائی کا دورانیہ زیادہ ہے تو آپ انتہائی عقلمند انسان ہیں کیونکہ۔۔۔ سائنسدانوں نے تحقیق میں ایسی چیز ڈھونڈ نکالی کہ آپ بھی حیران رہ جائیں گے

  


نیویارک(نیوزڈیسک) اگلی بار جب آپ جمائی لیں گے تو کوشش کریں کہ زیادہ سے زیادہ منہ کھولاجائے اور لمبی جمائی لی جائے کیونکہ ایک تازہ تحقیق میں سائنسدانوں کاکہنا ہے کہ جمائی اور انسانی دماغ میں گہرا تعلق ہے۔سٹیٹ یونیورسٹی آف نیویارک کے تحقیق کاروں نے حال ہی میں جرنل Biology Lettersمیں لکھا ہے کہ جمائی کے دورانیہ اور بڑے دماغ میں گہرا تعلق ہے۔

سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ کئی جانور جیسے لوپڑی،چوہوں اور خرگوشوں کی جمائی کا دورانیہ مختصر ہوتا ہے جبکہ گوریلا،اونٹوں،ہاتھیوں اور بندروں کی جمائی کا دورانیہ زیادہ ہوتا ہے۔یونیورسٹی کے ماہر نفسیات ڈاکٹراینڈریوگیلپ نے اپنی تحقیق میں بتایا ہے کہ گوریلوں،ہاتھیوں اور دیگر بڑے جانوروں کی جمائی انسان کی نسبت کم ہوتی ہے جو اس بات کو ظاہر کرتی ہے کہ انسان کا دماغ اور جمائی کے درمیان گہرا تعلق ہے۔سائنسدانوں نے مختلف جانوروں کی جمائی کے دورانیہ کا موازنہ کیا ،تحقیق میں 24مختلف جانوروں کی 205جمائیوں کا موازنہ کیا گیا۔ان کا کہنا ہے کہ انسان سات سیکنڈ تک کی جمائی لیتا ہے جبکہ افریقی ہاتھی کی جمائی کا ورانیہ چھ سیکنڈ ہوتا ہے،اونٹ میں یہ دورانیہ پانچ اور چیمپینزی کا دورانیہ پانچ سیکنڈ سے کم ہوتا ہے۔تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ اس تحقیق سے یہ بات جاننے میں مدد ملی کہ جمائی کے پیچھے کیا حکمت کارفرما ہے ۔ڈاکٹر اینڈریو کا کہنا ہے کہ جمائی کے ذریعے جانداروں کا دماغ پرسکون رہتا ہے اور ان کا دماغ بہتر طریقے سے کام کرتا ہے۔اس کا کہنا ہے کہ جن جانداروں کی جمائی کا دورانیہ زیادہ ہوتا ہے ان کے دماغ کا سائز بھی بڑا ہوسکتا ہے جس کی وجہ سے وہ دیگر جاندوروں کی نسبت زیادہ بہتر پرفارم کرتے ہیں۔

مزید : تعلیم و صحت