سندھ میں لاؤڈ سپیکرپر پابندی ختم کرنا تشویشناک ہے،احمد لدھیانوی

سندھ میں لاؤڈ سپیکرپر پابندی ختم کرنا تشویشناک ہے،احمد لدھیانوی

لاہور(خبر نگار خصوصی)اہلسنت والجماعت پاکستان کے سربراہ علامہ محمد احمدلدھیانوی نے کہاکہ سندھ میں لاؤڈاسپیکرسے پابندی ختم کرنے سے کسی سازش کی بو آرہی ہے،11ماہ لاؤڈاسپیکرپرپابندی رہتی ہے جبکہ ایک ماہ کے لیے مخصوص طبقہ کو نوازنے کے لیے اجازت دیناتشویش ناک ہے،پیپلز پارٹی کے وزیراعلیٰ میاں منظوروٹو کے دورسے اسپیکرز پرپابندی ہے ،حکام بالا،انتظامیہ اورقانون نافذ کرنے والے اداروں کا اس بات پر اتفاق ہے کہ لاؤڈاسپیکرپرپابندی سے دہشت گردی ،فرقہ واریت میں کافی حد تک کمی واقع ہوئی ہے،نیشنل ایکشن پلان کے تحت اہلسنت کی آذانوں کی آواز کو بھی محدود کردیا گیا تھا ،کئی سبزی فروش ریڑھی بان افراد کو اسپیکرایکٹ کی خلاف ورزی پر مقدمات میں ڈالا گیا، گیارہ ماہ پابندی کے بعد محرم الحرام میں پابندی ختم کرکے حکام بالااہلسنت مکتبہ فکر کو کیا پیغام دینا چاہتے ہیں؟اہلسنت والجماعت کا پرزور مطالبہ ہے کہ محرم الحرام میں کسی بھی ناخوشگوار واقعہ سے بچنے کے لیے طے شدہ ضابطہ اخلاق کی مکمل پاسداری کی جائے،محرم الحرام میں اہل تشیع مکتبہ فکر کو مکمل سیکورٹی فراہم کرنا حکومت کی ذمہ داری ہے،ان خیالات کا اظہار انہوں نے مرکز اہلسنت میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا،علامہ محمد احمدلدھیانوی نے وزیراعظم ،آرمی چیف اور وزیرداخلہ سے اپیل کی ہے کہ سندھ میں لاؤڈاسپیکرکی اجازت کانوٹس لیں،جانبدارانہ رویوں سے امن کا خواب شرمندہ تعبیرنہیں ہوسکتا ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1