یمنی باغی جنگ بندی پر متفق، مذاکرات پر آمادہ ہو چکے ہیں: اقوام متحدہ

یمنی باغی جنگ بندی پر متفق، مذاکرات پر آمادہ ہو چکے ہیں: اقوام متحدہ

مسقط(این این آئی)یمن کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی اسماعیل ولد الشیخ احمدنے کہاہے کہ آئندہ چند روز میں یمن میں 72 گھنٹوں کی قابل توسیع جنگ بندی کے معاہدے کا اعلان کر دیا جائے گا اور ساتھ ہی اس جنگ بندی پر عمل درآمد کے لیے امن کمیٹی کو فعال کر دیا جائے گا۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ولد الشیخ نے یہ بات سلطنت عمان کی سرکاری خبر رساں ایجنسی کو دیے گئے ایک بیان میں کہی۔ انہوں نے یہ انکشاف بھی کیا کہ وہ اس سلسلے میں یمنی صدر عبدربہ منصور ہادی سے ملاقات کے لیے سعودی عرب کا دورہ کریں گے۔اقوام متحدہ کے ایلچی نے یہ عندیہ دیا کہ حوثی اور معزول صالح فائربندی کے لیے قائل اور امن اور کوآرڈی نیشن کمیٹی کے فعال ہونے پر آمادہ ہوچکے ہیں۔انہوں نے باور کرایا کہ یہ لوگ کمیٹی کے کام میں شریک ہونے کے لیے تیار ہیں جو کہ عمان میں بات چیت کا مثبت ترین نقطہ ہے۔ولد الشیخ کے مطابق آئندہ دو ہفتوں کے دوران اس بات کی توقع ہے کہ امن کے قیام اور یمن کے مسئلے کے حل کے واسطے اقوام متحدہ کے مربوط منصوبے کا حقیقی دستاویز پیش کر دیا جائے گا۔

تاہم انہوں نے واضح کیا کہ اس دستاویز کے پیش کیے جانے سے قبل بعض مشاورتیں مطلوب ہیں۔

مزید : عالمی منظر