ٹرین حادثات میں اضافہ، مسافر ریل کے سفر سے اجتناب کرنے لگے

ٹرین حادثات میں اضافہ، مسافر ریل کے سفر سے اجتناب کرنے لگے

لاہور(محمد نواز سنگرا)ٹریفک حادثات میں اضافے کی وجہ سے مسافر وں کا ٹرین سے اعتماد اٹھنے لگا ہے۔ گزشتہ ایک ماہ کے دورا ن 2بڑے حادثات پیش آئے جن میں سے ایک شاہ شیراور بچ ریلوے اسٹیشن کے درمیان اور دوسرا پتوکی کے قریب پیش آیا ۔دونوں میں انسانی جانوں کا ضیاع بھی ہوا۔دوسری طرف محکمہ ریلوے ٹرین حادثات کو روکنے میں جامع حکمت عملی بنانے میں ناکام ہو گیا ہے اور حادثات کی روک تھام کی بجائے محض چند ملازمین کی معطلی پر ہی معاملہ ٹھپ کر دیا جاتا ہے ۔گوجرانوالہ میں پیش آنے والے ایک بڑ ے ٹرین حادثے کی سزا بھی چھوٹے درجے کے ملازمین کو دی گئی ۔مگر ریلوے نے نہ تو ناکارہ پلوں کی جگہ نئی پلیں تعمیر کی ہیں اور نہ ہی ٹریک کی بہتری ،ٹرین سٹاف کی تربیت اور دیگر اہم حفاظتی اقدامات اٹھائے ہیں ۔اکثر حادثات سگنلز کی وجہ سے بھی پیش آرہے ہیں جن کو چلانے کیلئے عملے کو تربیت دی گئی ہے اور نہ ہی سگنلز کو جد ید طرز پر لایا گیا ہے۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ شیر شاہ اور بچ ریلوے اسٹیشن کے درمیان مال گاڑی سے عوام ایکسپریس ٹکراگئی تھی جس کی بڑی وجہ یہ تھی اسسنٹ اسٹیشن ماسٹر نے مال گاڑی نکلنے کے 13منٹ بعد عوامی ایکسپریس چلا دی اور دوران مال گاڑی کی سپیڈ 55اورعوامی ایکسپریس کی سپیڈ 105تھی جس کے باعث عوامی ایکسپریس مال گاڑی سے ٹکرا گئی تھی ۔جس میں سگنل کی خرابی کا عنصر بھی شامل تھا دوسرے طرف محکمہ ریلوے ٹرینوں کیلئے ایسے اقدامات بھی نہیں کر سکا جس سے بم دھماکوں سے محفوظ بنایا جا سکے ۔ٹرینوں میں بم دھماکوں کی وجہ سے سینکڑوں افراد کی جانیں چلی گئی ہیں ۔سب سے زیادہ حملے بلوچستان میں ہوئے ہیں ۔ذرائع کے مطابق سال 2016میں85سے زائد ٹرین حادثات پیش آچکے ہیں جس وجہ سے ٹرین پر سفر کرنے والے مسافر سفر کرنے سے کترانے لگے ہیں ۔اس حوالے سے اے جی ایم ٹریفک مقصود النبی اور سی او پی ایس محمود الحسن سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ وہ مصروف ہیں اب اس حوالے سے کوئی بات نہیں کر سکتے۔

مزید : صفحہ آخر