پاکستان میں غیرت کے نام پر قتل کیخلاف قانون سازی خوش آئندہ ہے :امریکہ

پاکستان میں غیرت کے نام پر قتل کیخلاف قانون سازی خوش آئندہ ہے :امریکہ

 واشنگٹن( آن لائن )امریکہ نے غیرت کے نام پر قتل کے خلاف قانون سازی کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ پاکستان میں خواتین کے تحفظ کی جانب اہم قدم ہے۔امریکی محکمہ خارجہ کے نائب ترجمان جان کربی نے نیوز بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں غیرت کے نام پر قتل کے خلاف بل کی منظوری خوش آئند اور خواتین کے تحفظ کی جانب اہم قدم ہے۔اس سے معاشرے میں خواتین کی بھرپور شرکت کو فروغ ملے گا۔ سماجی آگاہی پھیلانا اور مجرموں کو انصاف کے کٹہرے میں لانا ضروری ہے۔ان اقدامات پر پاکستان کی بھرپور حمایت جاری رکھیں گے۔میڈیا بریفنگ کے دوران جان کربی نے مزید کہا کہ کشمیر کے معاملے پر پاکستان اور بھارت بات چیت کریں۔ سرجیکل اسٹرائیک ہوا ہے یا نہیں اس بارے میں بھارتی حکام ہی بتا سکتے ہیں۔ ہم دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی کا خاتمہ چاہتے ہیں۔۔۔ امریکا نے ایک بار پھر یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ پاکستان کو 'دہشت گردوں کی کفیل ریاست قرار' دینے کا خواہاں نہیں اور جنوبی ایشیا سے دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہوں کے خاتمے کے لیے جس حد تک ممکن ہو اسلام آباد کے ساتھ مل کر کام کرنا چاہتا ہے۔ امریکہ کو پورا بھروسہ ہے کہ پاکستان اپنے جوہری اثاثوں کی حفاظت کرسکتا ہے اور انہیں دہشت گردوں کے ہاتھ نہیں لگنے دے گا۔جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا امریکی حکومت پاکستان کو 'دہشت گرد ریاست' قرار دینے سے متعلق بل اور آئن لائن پٹیشن کی حمایت کرے گی تو انہوں نے کہا کہ امریکا کا ایسا نہیں کرے گا۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا امریکا سمجھتا ہے کہ پاکستان جوہری ہتھیاروں کو دہشت گردوں کی پہنچ سے دور رکھ سکتا ہے تو انہوں نے کہا کہ ہمیں بھروسہ ہے کہ پاکستان کے پاس اپنے جوہری اثاثوں کے حوالے سے سکیورٹی کنٹرول موجود ہے اور میں چاہوں گا کہ اس معاملے میں وہ خود بات کریں۔دہشت گردی سے لڑنے میں پاکستان کی سنجیدگی کے حوالے سے کیے گئے سوال کے جواب میں جان کربی نے کہا کہ 'دہشت گردی جس طرح بھارتی شہریوں یا افغان شہریوں کے لیے خطرہ ہے بالکل اسی طرح پاکستانی شہریوں اور بچوں کے لیے بھی خطرہ ہے اور پاکستان نے اس چیلنج کو انتہائی سنجیدگی سے قبول کیا'۔ان کا مزید کہنا تھا کہ 'ہمیں کبھی ایک لمحے کے لیے بھی ایسا نہیں لگا کہ پاکستان اپنے شہریوں اور بچوں کی زندگیوں کو درپیش خطرات کے چیلنج کو سنجیدگی سے نہیں لیتا'۔

مزید : کراچی صفحہ اول