پشاور میں پرائمری ہیلتھ کیئر سسٹم کی بہتری کیلئے فیززیر وکا آغاز، تیمور جھگڑا 

پشاور میں پرائمری ہیلتھ کیئر سسٹم کی بہتری کیلئے فیززیر وکا آغاز، تیمور ...

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)خیبر پختونخوا کے وزیر صحت و خزانہ تیمور سلیم خان جھگڑا نے کہا ہے کہ پشاور میں پرائمری ہیلتھ کیئر نظام بہتر بنا رہے ہیں جس کے لئے ابتدائی طور پر فیز زیرو شروع کیا ہے جس میں صحت عملے اور چند بنیادی ضروریات کو پورا کیا جائے گا۔جبکہ آئندہ چند دنوں میں پشاور کے بنیادی مراکز صحت اور رورل ہیلتھ سنٹرز میں بہتر صحت سہولیات کی فراہمی کے لیے فیز ون کا آغاز کر دیا جائے گا۔ مراکز صحت کے اچانک دوروں اور مانیٹرنگ کے بعد پشاور کے دیہی و بنیادی مراکز صحت میں گزشتہ ماہ مریضوں کی آمد میں کئی گناہ اضافہ ہوا ہے۔جس پر فوری اقدام کرتے ہوئے پشاور میں 10 بی ایچ یوز کو 7/24 کھلا رکھنا کا فیصلہ کیا گیاہے۔ صوبائی وزیر صحت و خزانہ نے ان خیالات کا اظہار پشاور میں پرائمری ہیلتھ کیئر نظام کی بہتری کے لیے منعقدہ جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں ڈائریکٹر جنرل ہیلتھ سروسز ڈاکٹر نیاز محمد، ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر پشاور ڈاکٹر عظمت اور دیگر نے وڈیو لنک کے ذریعے شرکت کی۔ اس موقع پر وزیر صحت و خزانہ کا کہنا تھا کہ ہم نے پشاور میں بنیادی صحت نظام کو بہتر کرنے کا عزم کر رکھا ہے اور جلد ہی اسے پایہ تکمیل تک پہنچائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ مہینوں میں پشاور کے مراکز صحت کے اچانک دوروں اور غفلت کے مرتکب عملے کے خلاف کاروائیوں سے شہریوں کا صحت کے نظام پر اعتماد بحال ہواہے۔ گزشتہ ماہ ستمبر میں سب سے زیادہ مریضوں نے بی ایچ یوز اور آر ایچ سیز کا رخ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ شہریوں کی سہولت کو مدنظر رکھتے ہوئے 10 بی ایچ یوز کو 24گھنٹے اور پورا ہفتہ کھلا رکھنا کا فیصلہ کیا ہے جس پر جلد عملدرآمد شروع کر دیا جائے گا۔ پشاور کے ہسپتالوں کو 41 آکسیجن سلنڈر مہیا کر دئیے ہیں جبکہ خراب کارکردگی کے حامل 5 میڈیکل آفیسرز کو ٹرانسفر کر کے ان جگہ دوسرے ایم اوز کو تعینات کیا گیاہے۔ اسی طرح آر آیچ سیز میں خالی پوسٹوں پر 2 ایم اوز کی تعیناتی عمل میں لائی گئی ہے۔ تیمور جھگڑا کا کہنا تھا کہ پشاور میں بنیادی صحت نظام کی بہتری کے لیے فیز زیرو جاری ہے جبکہ فیز ون کا آغاز آئندہ چند دنوں میں کر دیا جائے گا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -