بزدل گھر بیٹھے رہیں، جو آئین کی عزت نہیں کرتا، میں اس کی عزت نہیں کرتا: نواز شریف، پاکستان کی ہر بیمار ی کا علاج ووٹ کو عزت دو میں ہے: مریم نواز

بزدل گھر بیٹھے رہیں، جو آئین کی عزت نہیں کرتا، میں اس کی عزت نہیں کرتا: نواز ...

  

لاہور(جنرل رپورٹر، این این آئی) پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائد و سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ جنہوں نے ملک میں ابتری کی کیفیت پیدا کی ہے انہیں جواب دینا ہوگا،سلیکٹرز بتائیں کیوں اس کاانتخاب کیا،کیوں اس کوسرپر لا کرسوارکر دیا،پاکستانی قوم اب یہ سوال پوچھے گی، اگر آج پاکستا ن کو بدلنا ہے اورحقیقت میں پاکستان میں تبدیلی لانی ہے تو ان سوالوں کے جواب چاہئیں،اس کے بغیر یہ ملک اور اسمبلیاں اورحکومتیں نہیں چل سکتیں، اس کے بغیر غریب کا چولہا اور پاکستان نہیں چل سکتا،سابقہ ڈی جی ایف آئی اے کا انٹرویو سب نے سن لیا ہے،جو کام ایف آئی اے نے نہیں کیا وہ نیب سے لیا جارہا ہے، آپ کو جواب دیناہوگا اورہمیں جواب لینا ہوگا اورہم جواب لینے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے،ہم غلام بن کے نہیں رہ سکتے اگر ایسا ہوتا رہا ہے تو آئندہ ایسا نہیں ہوگاہم پاکستان کو باوقار باعزت ملک بنائیں گے اس کا وہی راستہ ہے جو میں نے اے پی سی میں دیا ہے،جو آئین کی عزت نہیں کرتا میں اسکی عزت نہیں کرتامجھے فوج کے افسر عزیز ہیں لیکن وہ افسر مجھے پسند نہیں جو دھاندلی کرتے ہیں جو انتخابات چوری کرتے ہیں،مجھے کسی بزدل کی ضرورت نہیں،جوبزدل ہیں وہ گھروں میں بیٹھے رہیں، اسمبلیوں کوبھی ان کی ضرورت نہیں۔ ان خیالات کا اظہارانہوں نے مرکزی سیکرٹریٹ ماڈل ٹاؤن میں اراکین قومی وصوبائی اسمبلی،سینیٹ ممبران اور ٹکٹ ہولڈرزکے مشترکہ اجلاس سے ویڈیو لنک کے ذریعے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر راجہ ظفر الحق،شاہدخاقان عباسی،احسن اقبال، مریم نواز، پرویز رشید، خواجہ آصف،راناتنویرحسین، خواجہ سعد رفیق، مخدوم جاوید ہاشمی،مریم اورنگزیب سمیت دیگر بھی موجود تھے۔ نواز شریف نے کہا کہ میں پاکستانی ہوں اس لیے میرا حق ہے میں پاکستان کے مسائل کو سامنے لاؤں،آج ملک فیصلہ کن موڑ پر پہنچ چکا ہے آج تک ملکی مسائل کی اصل جڑ کی تشخیص تک نہیں ہوئی یا اس پر کوئی بات نہیں کرتا،میں نے 20 ستمبر کو اے پی سی میں پاکستانی مسائل کی اصل وجوہات کا ذکر کیا تھا، میں نے صاف شفاف انداز میں بات قوم تک پہنچائی تھی،آج بھی اگر ہم نے بات نہیں کرنی تو ہم اپنی نسلوں کو کیا دیں گے،کیا ہم کرائے کے ممبرز ہیں کہ کسی کے کہنے پر ووٹ دیدیں،ہم غلام بن کر اس ملک میں نہیں رہنا چاہتے،اگر پہلے ایسا ہوتا رہا ہے تو اب ایسا نہیں ہو گا ہم پاکستان کو باعزت اور باوقار ملک بنائیں گے،اس کا وہی راستہ ہے جو میں نے اے پی سی میں دیا ہے،اگر ہمیں تنگ نہ کیا جاتا تو آج پاکستان ترقی کر رہا ہوتا،ایٹمی دھماکے کرنے سے پاسپورٹ کو عزت ملی،سڑکوں کے جال بچھانے سے سبز پاسپورٹ کو عزت ملی،موٹر وے کیا تبدیلی والوں نے بنائی ہے؟، جے ایف تھنڈر ہم نے بنایا،ہم نے پاکستان کے دفاع کومضبوط کیا۔ نوازشریف نے کہاکہ ہماری فوج دنیا کی بہترین فوج تب ہوگی جب آئین کی پاسداری کرے گی،ہماری فوج آئین کی پاسدار ہے،صرف چند لوگوں نے ساری فوج کو بدنام کیا ہے،جو آئین کی عزت نہیں کرتا میں اسکی عزت نہیں کرتامجھے فوج کے افسر عزیز ہیں لیکن وہ افسر مجھے پسند نہیں جو دھاندلی کرتے ہیں جو انتخابات چوری کرتے ہیں۔آپ لوگ جیتے ہوئے تھے لیکن آپ کوہرایا گیا،اگر ووٹ کو عزت نہ دی پاکستان کی رہی سہی عزت چلی جائے ، دھاندلی کے باوجودفاٹا سے، ایم کیو ایم اور دیگر چھوٹی جماعتوں کے اراکین اسمبلی کوساتھ ملایا گیا اور انہوں نے عمران خان کو وزیراعظم بنوایا،اتناکچھ کرنے کے بعدبھی، اتنے بڑے پیمانے پر دھاندلی کرنے کے باوجودبھی، مانگے تانگے کے ووٹوں کے باوجود عمران خان چارووٹوں کی برتری سے وزیر اعظم بنایاگیااور اس نے پاکستان کا یہ حشرکردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے بزدل آدمی کی ضرورت نہیں ہے، اگر پاکستان کو بچانا ہوتو پھر دل کو تھوڑابڑاکرناہوگا،بہادری اور جرات کامظاہرہ کرنا ہوگا، اس کیخلاف اٹھنا ہوگا، اپنی قو م او ردنیا کوبتاناہوگا کہ ہم ظلم او رناانصافی کو قبول نہیں کرسکتے اور ہم اس وقت تک کھڑے رہیں گے جب تک یہ جنگ ہم جیت نہیں جاتے،، آج لوگ بھوک سے مررہے ہیں،انہیں دووقت کی روٹی نہیں ملتی، اشیائے خوردونوش کی قیمتیں آسمان سے باتیں کر رہی ہیں۔ چینی چور بھاگ گئے ہیں یا بھگادیا گیا ہے، دوائیاں عام آدمی کی پہنچ سے باہر ہیں،مریض کس طرح دوائیاں خریدتے ہوں گے، ایسے بھی پاکستانی ہیں جوکسی کے آگے ہاتھ نہیں پھیلاتے،کیا تین سال پہلے ملک کی یہ کیفیت تھی؟جنہوں ن ے یہ کیفیت پیدا کی ہے انہیں جواب دینا ہوگا،سلیکٹرز بتائیں کیوں اس کاانتخاب کیا،کیوں اس کوسرپر لا کرسوارکر دیا اورٹھونس دیا، پاکستانی قوم اب   یہ سوال پوچھے گی اورجب تک جواب نہ ملے آپ گھروں کو واپس نہیں جائیں گے،آپ چین سے نہیں بیٹھیں گے، عمران خان نے زمان پارک میں کروڑوں روپے سے نئی  نئی کنسٹرکشن کی ہے،کہاں سے آیا پیسہ، آپ سے پوچھنا بنتاہے کہ نہیں، علیمہ خان کی رسیدیں کب ملیں گی، ،حکومت اور نیب کی آنکھیں بند ہیں لیکن عوام کی آنکھیں بند نہیں ہیں،آپ نے عوام کو قوم کو الو بنانے کی کوشش کی ہوئی ہے لیکن یہ نہیں چلے گا،ہم یہ نہیں چلنے دیں گے

نواز شریف     

لاہور(جنرل رپورٹر،آئی این پی)پاکستان مسلم لیگ (ن)کی نائب صدر مریم نوازنے کہا ہے کہ پاکستان کی ہر بیماری کا علاج ووٹ کو عزت دو میں ہے،آپریشن ضرب عضب میں نواز شریف آگے کھڑا تھا،نواز شریف کی غداری کی گواہی چاغی کے پہاڑ بھی دے رہے ہیں نواز شریف نے کارکنان کو تنہا نہیں چھوڑا، انہوں نے سارے وار پہلے اپنے سینے پر سہے پھر کارکنان کو آواز دی،،نواز شریف کی آواز تو آپ نے بند کردی لیکن نواز شریف کا مقدمہ گھر، گھر اور گلی، گلی پہنچ چکا ہے اوہ جمعرات کو مسلم لیگ (ن)کے ارکان پارلیمنٹ  اور ٹکٹ ہولڈرز کے مشاورتی اجلاس سے خطاب کر رہی تھیں۔ انہوں نے کہا کہ دھونس دھمکی کے باوجود لیگی رہنما اور کارکنان ڈٹ کر کھڑے ہیں اور اپوزیشن کی تحریک فیصلہ کن مرحلے میں داخل  ہونے جا رہی ہے، قوم سے پوچھتی ہوں کہ کیسا غدار ہے جو ہندوستان کے 5 ایٹمی دھماکوں کے جواب میں 6ایٹمی دھماکے کر دے، آنے والی نسلوں کے دفاع کو مضبوط کیا اور اس کی گواہی چاغی بھی دیتے ہیں، کیسا غدار تھا جو جے ایف 17تھنڈر،  موٹروے بنایا گیا، دہشت گردی کا خاتمہ کر دیا گیا، آپریشن ضرب عضب، رد الفساد شروع کیا، دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑی، پاکستان کو روشنیاں دی گئیں۔ انہوں نے کہا کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے فیصلہ دیا ہے کہ میاں نواز شریف کے اشتہار ملک بھر میں لگائے جائیں لیکن یاد رکھیں جب لوگوں کو اشتہار نظر آئے گا تو اس میں جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کا چہرہ نظر آئے گا،جو آرٹیکل 6 کا مرتکب ہوا، عدالتوں نے سزا دی اور پھر پاکستان میں یہ ہوا کہ عدالت کو ہی صفحہ ہستی سے مٹا دیا گیا، 22کروڑ عوام کو مکے دکھاتے ہوئے ملک سے چلا گیا۔  مریم نواز نے کہا کہ ہائیکورٹ میں نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ ڈھول بجا کر اشتہاری کریں گے، تو کہتی ہوں کہ ضرور ڈھول بجائیں لیکن آواز جج ارشد ملک کی آئے گی، شوکت عزیز صدیقی کی گواہی کی آواز آئے گی، نواز شریف کے خلاف سازش، قاضی فائز عیسیٰ کے خلاف کیسز کی آواز آئے گی، بشیر میمن کی آواز آئے گی،۔ انہوں نے کہا کہ میڈیا میں  نواز شریف کی آواز کو بند کر دیا گیا ہے لیکن آج گلی گلی میں نواز شریف کی آواز ہے، نواز شریف  نے کارکنان کو اکیلا نہیں چھوڑ رہے،نواز شریف نے سارے ظلم اور وار پہلے اپنے سینے میں سہے ہیں کنٹینرز کے پیچھے نہیں چھپے رہے، آج بھی اپنی بیٹی کو صف اول  میں کھڑا کیا اور بیٹی ہمیشہ پہلی صف میں نظر آئے گی خواجہ آصف نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قوم  دو سال سے حکومت کی  نااہلی کی قیمت ادا کر رہی ہے، 70 سال سے قوم نے اتنا نقصان نہیں اٹھایا ہے جتنا عمران خان کے دو سال میں نقصان ہوا ہے، ملک کا سب کچھ لوٹ لیا گیا ہے،  انہوں نے کہا کہ معیشت، لوگوں کا سکون برباد ہو گیا،ر نواز شریف نے جمہوریت کی  جنگ کا اعلان کیا ہے، یہ جمہوریت کی جنگ ہے، ہم نے ہر دور میں جمہوریت کیلئے جنگ لڑی ہے،جب پی ڈی ایم کی تحریک عروج پر پہنچے گی  تو 84 کے 84 ارکان پارلیمنٹ استعفے دیں گے، دیکھیں گے کون سینیٹ کے الیکشن کرواتا ہے، پنجاب سے بھی  مسلم لیگ (ن)  کے ارکان پارلیمنٹ استعفیٰ دیں گے،عوام کی خواہشات کے آگے دھاندلی کا بند باندھا  گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج پاکستان ساری دنیا میں تنہاہے اس کا کوئی دوست نہیں ہے۔

مریم نواز

مزید :

صفحہ اول -