پی ٹی اے کا سوشل میڈیا کو قابو کرنے کا فیصلہ،نئے آن لائن رولز تیار

   پی ٹی اے کا سوشل میڈیا کو قابو کرنے کا فیصلہ،نئے آن لائن رولز تیار

  

  اسلام آباد (آن لائن)حکومت نے سوشل میڈیا کے بے لگام گھوڑے کو قابو کرنے کا فیصلہ کر لیا، پی ٹی اے نے نئے آن لائن رولز تیار کرلیے ہیں جن کے تحت دفاعی اداروں، مذہب، توہین رسالت، تشدد، نفرت انگیز مواد سمیت کسی شخص کی نجی زندگی کے متعلق مواد سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کرنے پر پابندی ہوگی، یو ٹیوب، فیس بک، ٹک ٹاک، ٹویٹر، گوگل پلس سمیت تمام کمپنیاں رولز کی پابند ہوں گی۔ نئے سوشل میڈیا رولز کے مطابق اسلام، دفاع پاکستان اور پبلک آرڈر سے متعلق غلط معلومات قابل سزا جرم ہوں گی۔ اخلاق باختہ اور فحش مواد کی تشہیر بھی قابل گرفت جرم ہوگا۔ سوشل میڈیا ادارے پاکستان کے وقار سلامتی دفاع کے خلاف مواد ہٹانے کے پابند ہوں گے۔ مذہب، توہین رسالت، حکومتی احکامات کے خلاف مواد پر بھی پابندی عائد ہوگی۔سوشل میڈیا ادارے یا سروس پرووائیڈرز کمیونٹی گائیڈلائنز تشکیل دیں گے۔گائیڈلائنز میں صارفین کو مواد اپ لوڈ کرنے کے متعلق آگاہی دیں گے۔کسی بھی شخص کے متعلق منفی مواد اپ لوڈ نہیں کیا جاسکے گا جبکہ دوسروں کی نجی زندگی کے متعلق مواد پر بھی پابندی ہوگی۔ پاکستان کے ثقافتی اور اخلاقی رجحانات کے مخالف مواد پر بھی پابندی ہوگی۔ کسی شخص کی نقل اتارنے والے مواد پر بھی پابندی عائد ہوگی۔ پانچ لاکھ سے زائد صارفین والی کمپنیوں کی پی ٹی آئی میں رجسٹریشن لازمی قرار دی گئی ہے جبکہ سوشل میڈیا اداروں پر پاکستان میں دفاتر کا قیام بھی لازمی قرار دیا گیا ہے۔ نئے رولز کے مطابق سوشل میڈیا ادارے 3 ماہ کے اندر اپنا فوکل پرسن مقرر کریں گے جبکہ تمام سوشل میڈیا ادارے 18 ماہ کے اندر پاکستان میں اپنا ڈیٹا بیس سرور بھی قائم کریں گے۔نئے آن لائن رولز کی منظوری وفاقی کابینہ سے جلد حاصل کی جائے گی وفاقی کابینہ سے منظوری کے بعد وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی نئے آن لائن رولز کے اطلاق کا نوٹیفیکیشن جاری کرے گی۔

سوشل میڈیا

مزید :

صفحہ اول -